fbpx

نیشنل بینک کے سرور پر سائبر حملہ ، صارفین کو خدمات کی فراہمی روک دی گئی

نیشنل بینک آف پاکستان کے سرور پر سائبر حملے کی وجہ سے صارفین کو خدمات کی فراہمی معطل ہوگئی۔ تفصیلات کے مطابق نیشنل بینک حکام نے بتایا ہے کہ 29 اور 30 اکتوبراکتوبر کی رات کے درمیان نیشنل بینک کے سرور پر سائبر حملہ کیا گیا ، جس کی وجہ سے بینک خدمات کا سلسلہ جزوی طور پر متاثر ہوا تو متاثرہ سسٹم کو بروقت الگ کر دیا گیا تاہم سائبر حملے میں بینک کو کسی قسم کے ڈیٹا یا مالیاتی نقصان کا سامنا نہیں کرنا پڑا۔
ترجمان نیشنل بینک کے مطابق فی الحال صارفین کو خدمات کی فراہمی معطل کی گئی ہے ، سائبر حملے کے تدارک اور سسٹم کی مکمل درستگی کے لیے دستیاب وسائل اور ملکی و غیر ملکی ماہرین کی خدمات بروئے کار لائی جا رہی ہیں جس کے بعد پیر کی صبح سے بنیادی بینکنگ خدمات کی بحالی کا امکان ہے.

خیال رہے کہ حال ہی میں فیڈرل بیورو آف ریونیو (ایف بی آر) پر بھی ہیکرز نے حملہ کیا تھا ، جس کے نتیجے میں ہیکرز مائیکروسافٹ کے اہم سافٹ ویئر کو توڑنے میں کامیاب ہوئے جس کی وجہ سے تمام سرکاری ویب سائٹس بند ہوگئیں جب کہ ویب سائٹس اور ڈیٹا سینٹر کی بندش سے ملکی شپمنٹس شدید متاثر ہوگئیں۔

میڈیا ذرائع کے مطابق ہیکرز گزشتہ چند روز سے ڈیٹا رومز میں گھسنے کی کوشش کر رہے تھے اس دوران سیریس سائبر اٹیک کی وارننگ بھی جاری کی گئی تاہم ایف بی آر نے وارننگ کو نظر انداز کیا اور آخر کار ہیکرز اپنی کوشش میں کامیاب ہوگئے ، ہیکرز کی جانب سے ایف بی آر پر کیے گئے سائبر حملے کے نتیجے میں ایف بی سے چلائی جانے والے تمام سرکاری ویب سائٹس بند ہوگئی ہیں ، ایف بی آر کی ویب سائٹس اور ڈیٹا سینٹر بند ہونے سے ملک کی شپمنٹس بھی متاثر ہوئی ہیں جب کہ سائبر حملے کے نتیجے میں کسٹمز پر بھی دباؤ آگیا ، جس سے بارڈر سٹیشنز پر تازہ سبزیوں کی کنسائنمنٹس پھنس کر رہ گئی ہیں اس کے علاوہ صارفین ایکٹو ٹیکس پیئر لسٹ سے مستفید ہونے سے بھی محروم ہوگئے۔
ایکسپریس ٹریبیون کی رپورٹ میں ایک اعلیٰ افسر کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ یوم آزادی کے موقع پر سائبر دہشت گردی ہوئی ، جس میں ہیکرز نے ایف بی آر کے ڈیٹا سینٹر پر حملہ کیا اور مائیکروسافٹ کے ہائپر وی سافٹ ویئر کو توڑنے میں کامیاب ہوگئے ، اس دوران ہیکرز نے ڈیٹا سینٹر کی ورچوئل انوائرمنٹ اور ہائپر وی سافٹ ویئر کو نقصان پہنچایا۔

Facebook Notice for EU! You need to login to view and post FB Comments!