fbpx

قومی کرکٹ ٹیم کے کھلاڑیوں کی شرٹوں کے نمبرز میں چُھپے دلچسپ رازوں سے پردہ اٹھ گیا

قومی کرکٹ ٹیم کے کھلاڑیوں کی شرٹوں کے نمبرز میں کیا راز چھپا ہوسکتا ہے؟ اس حوالے سے پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے ایک ویڈیو جاری کی ہے جس میں تمام کھلاڑیوں نے اپنی شرٹوں کے نمبروں کے پیچھے چھپے راز بیان کیے ہیں۔

باغی ٹی وی : کپتان بابر اعظم کا کہنا تھا کہ میرا نمبر 56 ہے سب کو پتہ ہے اور اس میں راز ایسا کچھ نہیں ہے انہیں سب سے پہلے 33 نمبر ملا تھا پھر انہیں 56 نمبر کی آپشن دی گئی تو انہوں نے 56 رکھ لیا جو کہ اب انہیں اچھا لگتا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ پہلے اتنا اہم نہیں تھا ان کے لئے نمبر لیکن اب یہ ان کی کرکٹ کے سفر کا حصہ بن گیا ہے کوشش کرتا ہوں کہ اس نمبر کی ویلیو برقرار رکھوں اور اس نمبر کو اپنا فخر محسوس کرتے ہیں اب وہ اسی نمبر کیساتھ ایک برانڈ بھی لانچ کرنے جارہے ہیں۔

وکٹ کیپر بلے باز محمد رضوان کے مطابق ان کی شرٹ کا نمبر 16 اس لیے ہے کیونکہ انہوں نے لیدر بال سے اپنی پہلی اننگز میں 16 رنز سکور کیے تھے۔ان کیلئے 16 نمبر خوش قسمت ہے۔چھ کا ہندسہ ان کی اور ان کی اہلیہ کی سالگرہ کی تاریخوں میں بھی آتا ہے،جبکہ ایک اور چھ کا ہندسہ ان کی دونوں بیٹیوں کی سالگرہ کی تاریخوں میں آتا ہے۔

شاہین شاہ آفریدی کا کہنا تھا پہلے ان کی شرٹ کا نمبر 40 تھا مگر وہ 10 نمبر شرٹ لینا چاہتے تھے کیونکہ شاہد آفریدی کی شرٹ کا یہ نمبر تھا اور ان کو دیکھ کر انہوں نے کرکٹ شروع کی تھی وہ ان کے پسندیدہ کھلاڑی ہیں اس نمبر کے لئے انہوں نے 2018 میں پی سی بی سے اس نمبر کے لئے درخواست بھی کی تھی لیکن اس وقت لالہ نے کرکٹ سے ریٹائرمنٹ نہیں لی تھی تاہم بعد میں انہیں شاہد آفریدی نے اجازت دی جس پر وہ ان کے شکر گزار ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ جب وہ اس نمبر کی شرٹ پہنے گراؤنڈ میں ہوتے ہیں تو فخر محسوس کرتے ہیں کیونکہ اس نمبر کو لالہ پہنتے تھے فخر زمان نے بتایا کہ ان کی شرٹ کا نمبر پہلے کوئی اور تھا ،نیوی میں ان کے کمرے کا نمبر 39 تھا اس لیے انہوں نے اپنی شرٹ کے لیے 39 نمبر منتخب کیا۔

شاداب خان کا کہنا تھا پہلے ان کا نمبر 29 تھا بعد میں انہوں نے سات نمبر سلیکٹ کیا کیونکہ 7 نمبر انہیں شروع سے پسند تھا شعیب ملک کے مطابق ان کی شرٹ کا نمبر 18 ہے،شروع سے انہیں یہی نمبر ملا،درمیان میں کچھ اور نمبر زبھی ملے مگر اب ان کی شرٹ کا نمبر 18 ہے اور اس کے پیچھے کوئی خاص کہانی نہیں ہے-

آصف علی نے بتایا کہ ان کا شرٹ نمبر 45 ہے جس کے پیچھے کوئی کہانی نہیں، پی سی بی نے دیا تھا اب اس کے ساتھ ایک تعلق بن گیا ہے۔ آٹوگراف کے پیچھے 45 ضرور لکھتا ہوں۔

فاسٹ بولر حارث رؤف نے بتایا کہ پی سی بی نے انہیں 97 نمبر دیا ہے لیکن انہوں نے 150 نمبر کی درخواست کی تھی کیوں کہ ان کی کوشش ہوتی ہے 150 کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے گیند کرائیں۔

Facebook Notice for EU! You need to login to view and post FB Comments!