ورلڈ ہیڈر ایڈ

نواز شریف کی جانب سے ڈیل ہو سکتی ہے.سینیٹر مشاہداللہ کا دعویٰ

مسلم لیگ ن کے سینئر رہنما سینیٹر مشاہد اللہ خان کا کہنا ہے کہ نواز شریف کی جانب سے اگر ڈیل پر بات چیت اگر ہو گی تو اصول کو قائم رکھ کر ہو گی، اصولوں کو توڑ کر نہیں ہو گی، ڈیل کا لفظ اچھا نہیں میاں صاحب کے لئے ڈیل کرنے کا یہ وقت نہیں۔

نواز شریف کی جیل میں زندگی خطرے میں ،صحت کے حوالہ سے اہم انکشاف باغی ٹی وی سامنے لے آیا

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق سینیٹر مشاہداللہ خان نے اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اب ڈیل کرنا ان لوگوں کی مجبوری ہے جن سے پبلک پریشر برداشت نہیں ہو رہا، نوازشریف اور ان کی جماعت ووٹ کو عزت دو کے موقف پر ڈٹی ہوئی ہے، نوازشریف کو جیل میں ڈالنے والے نے خود کہہ دیا ہے کہ میں غلط کیا اس کے بعد بات ختم ہوجاتی ہے ڈیل میاں صاحب کی خواہش نہیں، دیکھنا ہے کہ اب یہ کس کی خواہش ہے۔

نواز شریف اور آصف زرداری سے ڈیل، وزیر داخلہ نے کیا جواب دیا؟

جیل میں نواز شریف کو قتل کرنے کی سازش کی جارہی ہے، شہباز شریف

نوازشریف و زرداری کو چھوڑنے کا اعلان، پاکستانی سیاست میں ہلچل مچ گئی

العزیزیہ ریفرنس،نوازشریف کی سزا کے خلاف اپیل سماعت کے لئے مقرر

سینیٹر مشاہداللہ خان کا مزید کہنا تھا کہ شہباز شریف کی پارٹی میں اکثر معاملات پر رائے الگ ہوتی ہے لیکن وہ نوازشریف کے ساتھ کھڑے رہے ہیں .ڈیل کے حوالہ سے بھی شہبازشریف کی رائے مختلف ہوئی تو نواز شریف کی رائے کو ہی ترجیح دی جائے گی

ممکنہ ڈیل….نواز شریف نے شہباز شریف کو کوٹ لکھپت جیل میں کیا کہا؟

واضح رہے کہ سینیٹر مشاہداللہ خان اسوقت پارٹی سے نالاں ہیں، مسلم لیگ ن محرم کے بعد خیبر پختونخواہ میں جلسے کرنا چاہتی ہے اس کے لئے کمیٹی میں سینیٹر مشاہداللہ خان کا نام شامل کیا گیا لیکن انہوں نے خرابی صحت کا بہانہ بنا کر کمیٹی میں شامل ہونے سے انکار کر دیا، اب خیبر پختونخواہ میں چند دنوں بعد ہونے والے ن لیگ کے جلسوں سے احسن اقبال، مریم اورنگزیب، خواجہ آصف اور کیپٹن ر صفدر خطاب کریں گے.

 

سابق وزیراعظم نواز شریف رہائی کے بعد بیرون ملک جا سکتے ہیں. باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق ان خیالات کا اظہار مسلم لیگ ن کے سینئر رہنما رکن قومی اسمبلی خواجہ آصف نے نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے کیا، خواجہ آصف کا کہنا تھا کہ رہائی کے بعد اگر نوازشریف بیرون ملک جانا چاہیں تو وہ ان کی مرضی ہوگی، ان کے جانے کے بعد مستقبل میں پارٹی کو کون لیڈ کرے گا یہ نوازشریف فیصلہ کریں گے،

 

واضح رہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف کوٹ لکھپت جیل میں قید ہیں اور العزیزیہ ریفرنس کیس کی سزا کاٹ رہے ہیں، حکومت نے نواز شریف کا اے سی بند کر دیا ہے اور تمام سہولیات واپس لے لی ہیں، نواز شریف سے جمعرات کو ملاقات کا دن مقرر ہے

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.