fbpx

نواز شریف کی تین بڑی غلطیاں اور سیاسی موت ، عمران خان کی بڑی کمزوری ، خوشحالی کیسے مفلوج ہوئی ،جاوید چوہدری کے اہم انکشافات

نواز شریف کی تین بڑی غلطیاں اور سیاسی موت ، عمران خان کی بڑی کمزوری ، خوشحالی کیسے مفلوج ہوئی ،جاوید چوہدری کے اہم انکشافات

باغی ٹی وی : سینئر اینکر پرسن مبشر لقمان کے تازہ وی لاگ میں سینئر صحافی اور کالم نگار جاوید چوہدری نے موجودہ حکومت پر بات کرتے ہوئے کہا کہ موجودہ حکومت کو پی ڈی ایم ختم ہونے کے بعد کوئی خطرہ نہیں ہے .

بلکہ ان کو 2011 کے جلسے کے بعد سے لے کر اب تک کوئی خطرہ نہیں ہے . ان کا دھرنا جب ہوا تب بھی پی ٹی آئی کی دھوم تھی مختصر یہ کہ حکومت کو باہر کسی چیز سے بھی خطرہ نہیں رہا تھا .

ان کا کہنا تھا کہ پچھلے دس سالوں میں پی ٹی آئی کو کوئی خطرہ نہیں ہے . ان کے رستے میں جو بھی رکاوٹ بھی آئی اس کو دور کردیا گیا . اور جوبھی خطرہ ثابت ہوا اس کو رستے سے ہتا دیا گیا . میاں نواز شریف ان کے لیے خطرہ تھے ان کو ہٹادیا گیا ،

آصف علی زرداری ان کے لیے خطرہ تھے ان کو کیسے نیب کےچکروں سے لے کر کراچی ہسپتال شفٹ کرنے تک دور گیا گیا . مولانا فضل الرحمن عمران خان صاحب کے لیے خطرہ تھے کیسے انکی پارٹی کے اندر سے لوگوں کو کھڑا کر دیا گیا اور وہ بھی پیچھے ہٹ گئے
.

جاوید چودھری کا کہنا تھا کہ الغرض جو بھی رکاوٹ یا خطرہ پیداہوا ان کو ایک ایک کر کے راستے سے ہٹادیا گیا اور ان کی گراوؤنڈ ہموار کی گئی ، بلکہ ان کے لیے ایسے ایسے راستے ہموار کیے گئے جیسے کسی کے لیے نہیں کیے گئے . بس اگر انکو کسی چیز سے خطرہ ہے تو وہ صرف ان کی اپنی ذات ہے . اوران کی اپنی ذات اور کارکردگی ہی ان کو ڈبو دے گی .

جاوید چوہدری کا کہنا تھا کہ آپ دیکھ سکتے ہیں. ان کا مخالف نہ آئی ایم ایف ہے نہ امریکا ہے نہ سعودی عرب ہے اور نہ کوئی اور ہے عمران خان کی اپنی اپوزیشن ان کے لیے خطرہ ہے اور آپ دیکھ سکتے ہیں کہ انہوں نے اپنی حکومت کے دورن کس طرح بیڑہ غرق کیا ہے آپ دیکھ سکتے ہیں .

مبشر لقمان نے جاوید چوہدری سے سوال کیا کہ آپ بتائیں کہ میاں نواز شریف کا کیا سیاسی مستقبل ہے تو اس کے جواب میں جاوید چوہدری کا کہنا تھا کہ میاں نواز شریف نے تین بڑی غلطیاں کی ہیں . اگرچہ مسلم لیگ ن اب بھی سب سے بڑی اور معروف سیاسی جماعت ہے .

اگر فیئر الیکشن ہو تو وہ اب بھی دو تہائی اکثریت حاصل کر سکتی ہے . اس کی کئی وجوہات ہیں جن میں میجر یہ ہیں کہ وہ تجربہ کار جماعت ہے انہوں نے ڈلیور بھی کیا ہے ، وہ حلقے کی سیاست کو سمجھتے ہیں. اور انہوں نے حکومت بھی تین دفعہ کر رکھی ہے .

جاوید جوہدری نے میاں نواز شریف کی سیاسی غلطیوں کی نشاندہی کرتے ہوئے کہا کہ ایک تو میاں نواز شریف نے پانامہ کیس کو صحیح طرح سے ہنڈل نہیں کیا ، دوسرا انہوں نے جوبڑی غلطی کی کہ وہ ملک سے باہر چلے گئے اگر وہ جیل میں ہوتے تو اس وقت مسلم لیگ ن ایک اور جماعت ہوتی .

تیسرا یہ کہ ان کے بیانے میں وہ کھلی بات نہیں ہے کبھی وہ اسٹیبشمنٹ کے ساتھ لڑنے کی بات کرتے ہیں تو پھر دوسری طرف ان سے صلح کرتے اور مفاہمت کرتے بھی دکھائی دیتے ہیں. یہ کھل کر لڑیں یا پھر مفاہمت کی بات کریں . یہ سیاست کے لیے درست نہیں کہ آپ دو راستے اپنائے رکھیں .

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.