fbpx

نیوکلیئر ہتھیار غیر محفوظ . تحریر، فروا منیر

نیوکلیئر ہتھیار غیر محفوظ . تحریر، فروا منیر

پوری دنیا میں ایٹم بنانے والے ملکوں پے مخصوص قسم کی پابندیاں ہیں جن میں ایٹم میں استعمال ہونے والی دھات یورینیم کا عام استعمال اور اس کی عام عوام تک رسائی سب سے اہم پابندی ہے
دنیا میں یورینیم کو 2 کاموں کے لیے استعمال کیا جاتا ہے جن میں انرجی (بجلی بنانے) اور ایٹم بنانا ہے شامل ہیں
دنیا پوری میں بہت کم ممالک ہیں جہاں یارینیم  سی بجلی بنائی جاتی ہے  اور پھر ان ممالک میں بھی مخصوص مقدار میں بجلی بنائی جاتی ہے  باقی پوری دنیا میں جہاں بھی یورینیم استعمال ہو رہی ہے اس کا استعمال صرف ایٹم کے لیے ہو رہا ہے
اس طرح اگر یہ دھات عام عوام یا کسی مخصوص گروہ کے ہاتھ لگ جائے تو اس کو دنیا کے امن کو خواب کرنے کے لیے استعمال کیا جا سکتا ہے
دوسری عالمی جنگ کے دوران امریکہ نے جاپان ہے صرف 2 بم گرائے تھے اور دونوں الگ الگ مقامات پر گرائے تھے جس کا اثر آج تک دنیا محسوس کر رہی ہے
جاپان میں آج بھی ہیرو شیما اور ناگا ساکی شہروں میں سبزہ نہیں اگتا اور نا ہی وہ انسان سکون کا سانس لے رہے ہیں
آج بھی پیدا ہونے والے بچوں میں جسمانی کمزوری اور بہت سی بیماریاں جنم لے رہی ہیں
80 سال بعد بھی اگر ایٹم بم کا اثر ہے تو اگر زیادہ مقدار میں استعمال کیا جائے تو کیا ہو گا
دنیا کو اس پے سوچنا ہو گا

گزشتہ ایک مہینے کے دوران بل ترتیب انڈیا میں 2 دفعہ یورینیم پکڑی گئی ہے جس کی مقدار جاپان میں استعمال ہونے والے ایٹم بم سے زیادہ یا اس کے برابر بتائی جاتی ہے
انڈیا میں پکڑی جانے والی یورینیم کوئی خاص لوگوں سے نہیں بلکہ انڈین حکمران جماعت کے زیر اثر چلنے والی دہشت گرد تنظیم آر ایس ایس کے کچھ لوگوں سے پکڑی گئی ہے جو دنیا کے لیے الارمنگ سیچوایشن ہے اقوام متحدہ سمیت عالمی اداروں کو اس پے سختی سے نوٹس لینا ہو گا اور انڈیا پے سخت پابندیاں لگانی ہوں گی تاکہ دنیا کا امن قائم رہ سکے اور دنیا اٹیمی ہتھیاروں کو محفوظ رکھنے میں اپنا کردار ادا کر سکے

یاد رہے انڈیا میں پکڑی جانے والی یورینیم میں ابھی تک کی انڈین رپورٹس کے مطابق کوئی بھی مسلمان ملوث ہونے کا کوئی شواہد نہیں ملے
پکڑے جانے والوں میں زیادہ ہندو اور پھر آر ایس ایس کے لوگ شامل ہیں
پوری دنیا خصوصی طور پر امریکہ اور اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کو اس پر سختی سے نوٹس لینا ہو گا

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.