آئی سی سی ورلڈ کپ 2023 ، نیوزی لینڈ نے آنگلینڈ کو 9 وکٹو ں سے ہرا دیا

0
87

احمد آباد : ورلڈ کپ 2023 کے پہلے میچ میں نیوزی لینڈ نے انگلینڈ کو 9 وکٹوں سے شکست دے دی ، نیوزی لینڈ کی ٹیم نے 283 رنز کا ہدف 37 ویں اوور میں با آسانی مکمل کر لیا ، ، 283 رنز کے ہدف کے تعاقب میں نیوزی لینڈ نے اننگز کا آغاز کیا تو سیم کرن نے اپنے اوور کی پہلی ہی گیند پر وِل ینگ کو کپتان جو بٹلر کی مدد سے چلتا کردیا۔تاہم پہلی وکٹ کے بعد انگلش باؤلرز وکٹ کے حصول کے لیے ترس کر رہ گئے کیونکہ ڈیون کونوے اور رچن ویندرا نے بیٹنگ کے لیے سازگار وکٹ پر انگلش باؤلرز کو دن میں تارے دکھا دیے۔دونوں کھلاڑیوں نے ناصرف بہترین بیٹنگ کا مظاہرہ کیا بلکہ جارحانہ انداز سے کھیلتے تقریباً 8 رن فی اوور کی اوسط سے رنز بنا کر انگلش باؤلر کے حوصلے پست کر دیے۔دونوں نے اپنی نصف سنچریاں مکمل کرنے کے بعد مزید جارحانہ انداز اپنایا اور تیزی سے سنچری کی جانب پیش قدمی کی۔
جلد ہی کونووے نے 83 گیندوں پر اپنی سنچری مکمل کی اور جدیجا نے بھی ان کی پیروی کرتے ہوئے 82 گیندوں پر سنچری مکمل کی۔دونوں کھلاڑیوں نے عمدہ کھیل کا سلسلہ برقرار رکھا اور اپنی ٹیم مزید کسی نقصان کے بغیر باآسانی 37ویں اوور میں ہدف تک رسائی دلا کر 9 وکٹوں کی شاندار فتح سے ہمکنار کرا دیا۔
کیوی بلے بازوں کی عمدہ بیٹنگ کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ جب نیوزی لینڈ نے ہدف حاصل کیا تو 82گیندیں باقی تھیں۔ڈیون کونوے نے 121 گیندوں پر 3 چھکوں اور 19 چوکوں کی مدد سے 152 جبکہ رچن رویندرا نے 96 گیندوں پر 5 چھکوں اور 11 چوکوں کی مدد سے 123 رنز بنائے۔آئی سی سی کرکٹ ون ڈے ورلڈکپ ، افتتاحی میچ میں انگلینڈ نے نیوزی لینڈ کو جیت کیلئے 283 رنز کا ہدف دے دیا۔ انگلینڈ نے مقررہ 50 اوورز میں 9 وکٹوں کے نقصان پر 282 رنز بنائے، انگلش ٹیم کی جانب سے جو روٹ 77 اور کپتان جوز بٹلر 43 رنز بنا کر نمایاں رہے۔

انگلینڈ نے اننگز کا آغاز کیا تو اوپنرز ڈیوڈ ملان اور جونی بیئراسٹو نے اپنی ٹیم کو 40 رنز کا آغاز فراہم کیا لیکن ملان 14 رنز بنانے کے بعد میٹ ہنری کی وکٹ بن گئے۔
اسکور 64 تک پہنچا ہی تھا کہ 33 رنز بنانے والے بیئراسٹو نے مچل سینٹنر کی گیند کو کور کے اوپر سے کھیلنے کی کوشش کی لیکن وہ سیدھا ڈیرل مچل کو کیچ دے بیٹھے۔
ہیری بروک نے روایتی جارحانہ انداز اپنایا اور رچن رویندرا کو مڈ وکٹ پر دو چوکے اور ایک چھکا لگایا لیکن مڈوکٹ پر ہی ایک اور چھکا لگانے کی کوشش میں وہ اپنی وکٹ گنوا بیٹھے، انہوں نے 16 گیندوں میں 25 رنز بنائے۔معین علی کو اوپری نمبروں پر بیٹنگ کے لیے بھیجا گیا لیکن یہ تجربہ ناکامی سے دوچار ہوا اور آل راؤنڈر صرف 11 رنز بنانے کے بعد گلین فلپس کی گیند پر بولڈ ہو گئے۔
اس دوران جو روٹ دوسرے اینڈ پر ڈٹے رہے اور ذمہ دارانہ کھیل پیش کرتے ہوئے نصف سنچری بنانے کے ساتھ ساتھ کپتان جو بٹلر کے ہمراہ پانچویں وکٹ کے لیے 70 رنز جوڑے۔بٹلر اچھی فارم میں نظر آئے اور 2 چھکوں اور دو چوکوں کی مدد سے 43 رنز کی باری کھیلی لیکن میٹ ہنری کی اندر آتی گیند کو کٹ کرنے کی کوشش میں وکٹ کیپر کو آسان کیچ دے بیٹھے۔
لیام لیونگسٹن بھی بڑی اننگز کھیلنے میں ناکام رہے اور 20 رنز بنانے کے بعد ٹرینٹ بولٹ کا شکار بن گئے۔
تاہم انگلینڈ کے بڑے اسکور کی امیدوں کو اصل دھچکا اس وقت لگا جب 77 رنز بنانے والے جو روٹ ریورس سوئپ کھیلنے کی کوشش میں گلین فلپس کی گیند پر بولڈ ہو گئے۔کرس ووکس بھی مشکل میں ٹیم کے کام نہ آسکے اور 11 رنز بنا کر چلتے بنے جبکہ سیم کرن بھی 14 رنز بنا کر ہنری کی تیسری وکٹ بن گئے۔
انگلینڈ نے آخری پانچ اوورز میں صرف ایک چھکا لگایا اور وہ کوئی چوکا بھی نہ لگا سکے اور 9 وکٹوں کے نقصان پر 282 رنز بنائے۔نیوزی لینڈ کی جانب سے میٹ ہنری نے 3 جبکہ مچل سینٹنر اور گلین فلپس نے دو، دو وکٹیں اپنے نام کیں۔

احمدآباد کے نریندر مودی اسٹیڈیم میں ورلڈکپ کے افتتاحی میچ میں نیوزی لینڈ نے انگلینڈ کے خلاف ٹاس جیت کر فیلڈنگ کا فیصلہ کیا۔ورلڈکپ کا افتتاحی میچ احمدآباد کے نریندر مودی اسٹیڈیم میں کھیلا جارہا ہے ٹاس کے موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کیوی کپتان ٹام لیتھم نے کہا کہ وارم اپ میچ کے بعد اچھی تیاری کی ہے، کیسن ولیمسن صحتیاب ہورہے ہیں، اگلے میچز کھیلیں گے-
نیوزی لینڈ کے خلاف انگلینڈ کی پہلی وکٹ آٹھویں اوور میں 41 رنز پر گری ڈیوڈ ملان 14 رنز پر کیوی گیند باز ہینری کی چوتھی بال پر وکٹ گنوا بیٹھے،ایک وکٹ کے نقصان پر 51 رنز ہیں-نیوزی لینڈ کی طرف سے پلیئنگ الیون میں کپتان ٹام لیتھم، ڈیون کونوائے، ول یونگ، رچن روندرا، ڈیری مچل، گلین فلپس، مارک چیپ مین، ٹرینٹ بولٹ، میٹ ہینری، جیمز نیشم اور میٹ ہینری ٹیم کا حصہ ہیں۔
دفاعی چیمپیئنز انگلینڈ کی طرف سے کپتان جوس بٹلر، جونی بیرسٹو، ڈیوڈ ملان، جو روٹ، ہیری بروک، معین علی، سیم کرن، کرس ووکس، عادل رشید، مارک ووڈ اور لائم لوونگسٹن پلیئنگ الیون کا حصہ ہیں۔
واضح رہے کہ ورلڈ کپ کے میچ بھارت کے 10 شہروں میں شیڈول ہیں، جن میں شمال میں دھرم شالا سے لے کر جنوب میں بنگلورو اور چنئی تک شامل ہیں –
کرکٹ مصنف، تجزیہ کار اور کمنٹیٹر سی وینکتیش نے آسٹریلیا اور پاکستان کے درمیان وارم اپ میچ کے دوران حیدرآباد کے راجیو گاندھی انٹرنیشنل کرکٹ اسٹیڈیم سے سیٹوں کی خراب حالت دکھاتی تصاویر شیئر کیں جن میں پلاسٹک کی فیروزی نشستوں کو گندگی اور پرندوں کے فضلے سے اٹا دیکھا جاسکتا ہے۔

Leave a reply