نائن الیون کے بعد پاکستان نے امریکہ کی جنگ میں شامل ہو کر بہت بڑی غلطی کی، وزیراعظم عمران خان

وزیراعظم کی کونسل آن فارن ریلیشنز میں آمد ہوئی ہے، اس دوران انہوں نے مسئلہ کشمیراورپاکستان کی خارجہ پالیسی پراظہارخیال کیا،

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق اپنے خطاب میں انہوں نے کہاکہ کھیل میں بہت کچھ سیکھنےکا موقع ملتاہے، کھیل آپ کو زندگی کااہم سبق سکھاتے ہیں ، 22سال کی جدوجہدکےبعد اس مقام پرپہنچا، گھروں کوچلانے کیلئےاخراجات کم اور آمدن بڑھاناپڑتی ہے ، ماضی کی حکومتیں معیشت کودرست سمت پرگامزن کرنے میں ناکام رہیں ، ماضی کی حکومتوں کی ناکامی کی وجہ سےآئی ایم ایف جانا پڑا، ماضی کی حکومتیں خسارہ چھوڑکرگئیں، گزشتہ حکومتیں معیشت کی سمت درست کرنے میں ناکام رہیں، کھیلوں سے آپ اپنے ہدف کو پانے کی جدوجہد کرنا سیکھتے ہیں، چین ، سعودی عرب اور یو اے ای نے معاشی حالات بہتر کرنے میں مدد کی، کرنٹ اکاؤنٹ خسارے کی وجہ سے آئی ایم ایف کے پاس جانا پڑا، گھر کو چلانے کے لیے بھی اخراجات کم اورآمدن بڑھانا ہوتی ہے،

وزیراعظم عمران خان نے کہاکہ چین نے ڈیفالٹ سے بچنے کے لیے پاکستان کی مدد کی ، ماضی کی حکومتوں کی معاشی ناکامی کے باعث آئی ایم ایف جانا پڑا، نائن الیون کے بعد پاکستان نے امریکا کی جنگ میں شامل ہوکر بہت بڑی غلطی کی، 2008 میں امریکا آیاتو ڈیموکریٹس کو بتایا تھا کہ افغان مسئلے کا فوجی حل نہیں ، دہشتگردی کے خلاف جنگ میں 70 ہزار لوگوں نے جانیں قربان کیں، دہشت گردی کے خلاف جنگ میں 200 ملین ڈالرز کا نقصان ہوا، سوویت فوج نےافغانستان میں جنگ کے دوران 10لاکھ شہریوں کو ہلاک کیا، پاکستان میں 27لاکھ افغان پناہ گزین رہ رہے ہیں،

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.