fbpx

طالبان رہنماوں کےدرمیان کوئی تلخ کلامی نہیں ہوئی یہ پراپیگنڈہ ہے:قاری یوسف کی باغی ٹی وی سےگفتگو

کابل:طالبان رہنماوں کے درمیان کوئی تلخ کلامی نہیں ہوئی یہ دشمنوں‌ کا پراپیگنڈہ ہے:افغان طالبان رہنما کی باغی ٹی وی سے گفتگو،اطلاعات کے مطابق افغان طالبان نے پاکستانی اورعالمی میڈیا پرپھیلائی جانے والی ان خبروں کو سختی سے مسترد کردیا ہے جن میں پراپیگنڈہ کیا جارہا ہےکہ افغان طالبان رہنماوں میں تلخ کلامی ہوئی ہے

کابل سے افغان حکومت کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد کے نائب قاری یوسف احمدی نے باغی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ یہ عالمی استعمار کی چالیں ہیں جن کا مقصد دنیا کوباورکرانا ہے کہ طالبان میں اختلاف رائے ہے ،مگرایسا نہیں ہے

قاری یوسف احمدی نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ یہ جوخبریں چل رہی ہیں‌ کہ نائب وزیر اعظم ملا برادر اور وزیر برائے مہاجرین خلیل الرحمان حقانی، جو حقانی نیٹ ورک کے سرکردہ رہنما بھی ہیں، کے درمیان تلخ جملوں کا تبادلہ ہوا جب کہ صدارتی محل میں موجود دونوں رہنماؤں کے پیروکاروں نے بھی ایک دوسرے سے تکرار کی۔یہ سراسرجھوٹ اورامارت اسلامی کے خلاف پراپیگنڈہ ہے

یاد رہےکہ کل سے پاکستانی اورعالمی میڈیا پرافغان طالبان رہنماوں کے درمیان اختلافات کے حوالے سے باقاعدہ منصوبہ بندی سے خبریں‌ چلائی جارہی تھیں کہ نائب وزیراعظم ملابرادراورخلیل الرحمن حقانی کے درمیان کسی معاملے پرتلخ کلامی ہوئی ہے

آج ذبیح اللہ مجاہد کے نائب قاری یوسف احمدی نے باغی ٹی وی سے ان خبیروں کی تردید کی ہے