این اے 75 ن لیگ کی نتائج روکنے کی درخواست، ہم جیت گئے، پی ٹی آئی امیدوار،حتمی فیصلہ کون کرے گا؟

این اے 75 ن لیگ کی نتائج روکنے کی درخواست، ہم جیت گئے، پی ٹی آئی امیدوار،حتمی فیصلہ کون کرے گا؟

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق مسلم لیگ ن کی این اے 75 سے امیدوارنوشین افتخار نے چیف الیکشن کمشنرکو درخواست کی ہے

نوشین افتخار کی جانب سے دی گئی درخواست میں کہا گیا ہے کہ انتخابات میں 23 پولنگ ا سٹیشن کا عملہ انتخابی نتائج سمیت غائب ہے،اب تک 335 اسٹیشنوں کےنتائج مرتب کیے گئے ہیں،ریٹرننگ افسر نے پریزائیڈانگ افسران اور عملے کی بازیابی پربےبسی کا اظہارکیا مسنگ نتائج کے حوالے سے شکوک شبہات پائے جاتے ہیں،مسنگ 30 پولنگ اسٹیشنوں کے نتائج معطل کرکے ان کا فرانزک آڈٹ کروایاجائے،الیکشن کمیشن کی طرف سے پوری صورتحال کے جائزے تک نتیجہ روک دیاجائے،مسنگ 23 اورڈسکہ سٹی کے 36 پولنگ ا سٹیشنوں میں دوبارہ انتخابات کروائے جائیں

دوسری جانب پی ٹی آئی رہنما عثمان ڈار کا کہنا ہے کہ الحمد اللہ ہمارا امیدوار علی اسجد ملہی جیت چکا ہے ،جو الیکشن ن لیگ جیتے وہ سہی جو ہارے اس میں دھاندلی کا الزام لگا دیتے ہیں،

وزیراعظم کے معاون خصوصی شہباز گل نے کہا ہے کہ مریم اور ان کے پاپا کے بیانیے کو شکست ہوئی،پی ٹی آئی این اے 75 کا الیکشن 7827 ووٹوں سے جیت چکی، جب آپ ریاست مخالف بیانیہ دیں گے کرپشن کریں گے تو ہار آپکا مقدر ہوگی،

ن لیگ کے افتخار الحسن عرف ظاہرے شاہ کے انتقال سے خالی ہونیوالی نشست این اے 75 ڈسکہ پر رات ساڑھے چار بجے تک زبر دست مقابلہ چل رہا تھا ، ادھر این اے 75 ڈسکہ میں سارا دن کشیدگی کا ماحول رہا، موٹر سائیکل سوار افراد کھلے عام جدید اسلحہ لیے سڑکوں پر دندناتے رہے، پولنگ کے دوران لڑائی جھگڑے کے واقعات بھی ہوئے اس دوران ایک پولنگ سٹیشن پر جھگڑے کے بعد فائرنگ سے 2 افراد جاں بحق اور 10 زخمی ہوگئے۔

پاکستان مسلم لیگ نون کے رہنما احسن اقبال نے ڈسکہ میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ این اے 75 میں جعلسازی کے ساتھ نتائج بنائے گئے، پریذائیڈنگ آفیسرز کو اغوا کیا گیا، انکوائری ہونے چاہیے کہ کن لوگوں نے یہ کام کیا، ان پولنگ سٹیشنز میں دوبارہ پولنگ ہونی چاہیے۔

احسن اقبال کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی نے دھاندلی کرنے کی پوری کوشش کی، کچھ پولنگ سٹیشنز پر گھنٹوں پولنگ بند رکھی گئی، فردوس عاشق نتائج بدلنے کیلئے الیکشن کمیشن پہنچیں، پی ٹی آئی کارکنوں نے فردوس عاشق اعوان کے طرز عمل کی مذمت کی، این اے 75 ڈسکہ میں آر او نے انتخابی نتائج روک دیئے، سرکاری دباؤ برداشت کرنے پر ریٹرننگ آفیسر کی تعریف کرتے ہیں۔

پاکستان مسلم لیگ ن کی ترجمان مریم اورنگزیب نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ تاریخ میں پہلی بار صرف ووٹ نہیں، الیکشن کمیشن کاعملہ بھی چوری ہوگیا، سارا دن پولنگ سٹیشنز پر حکومتی بدمعاشی کے مناظر عوام نے دیکھے، پولنگ ایجنٹس، پولنگ بیگ سمیت لاپتہ ہوگئے۔

مریم اورنگزیب کا کہنا تھا کہ الیکشن کمیشن کا اپنا پولنگ عملہ الیکشن کمیشن کی پہنچ سے دور ہے، الیکشن کمیشن بے بس، ریٹرننگ افسران یرغمال، کیا شفاف الیکشن ہے ؟ عمران صاحب نے بری طرح ہارنے پر الیکشن کمیشن کا عملہ چوری کرایا، الیکشن عملے کی چوری کی ایف آئی آر عمران خان اور بزدار صاحب پر کٹنی چاہیے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.