fbpx

نور جہاں سے متعلق نامناسب بیان پر علی عظمت کی وضاحت

پاکستان کے پاپ گلوکار علی عظمت نے میڈم نورجہاں کی شخصیت پرنامناسب الفاظ کہے تھے جس کے بعد انہیں نور جہاں کے چاہنے والوں جانب سے کافی تنقید کا سامنا کرنا پڑا-

باغی ٹی وی : حال ہی میں پاکستان کے پاپ گلوکار علی عظمت احمد پنسوٹا شو میں شریک ہوئے اور دوران شو پاکستانی میوزک اور آرٹس سمیت بین الاقوامی سطح پر تسلیم شدہ میوزک لیجنڈ ملکہ ترنم نورجہاں سے متعلق گفتگو کی۔


دوران شو علی عظمت نے برسوں سے تبدیل ہوتی پاکستان میوزک انڈسٹری سے متعلق گفتگو کرتے ہوئے کہا تھا کہ میرے بچپن میں نورجہاں ساڑھی کے ساتھ بڑے بڑے ایئررنگ پہنے اور اضافی میک کرکے گانے گاتی تھیں، اس وقت ہمیں ان سے چڑ چڑھتی تھی۔

علی عظمت نے کہا تھا کہ نور جہاں اس وقت بڑھاپے میں تھیں اور ہم سمجھتے تھے کہ انہیں دیکھنا ہمارے لیے ضروری نہیں ہے یہ وہ وقت تھا جب ہم نے دوسروں کی ثقافت کو قبول کیا اور پھر یہ معمول بن گیا۔

علی عظمت کے اس بیان کے بعد انہیں شوبز شخصیات سمیت صارفین کی جانب سے کافی تنقید کا نشانہ بنایا گیا جس کے بعد انہوں نے نور جہاں سے متعلق استعمال کیے جانیوالے الفاظ کی وضاحت پیش کی ہے۔



فیس بک پر جاری بیان میں علی عظمت نے کہا کہ سوشل میڈیا پر میرے حوالے سے ایک مہم چلائی جارہی ہے جس میں علی عظمت اور نورجہاں کا مقابلہ کیا جارہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ احمد علی بٹ، محمد علی بٹ، نازیہ اور حنا درانی میری فیملی ہیں، میں ان سے بہت پیار کرتا ہوں اور ان کی عزت بھی کرتا ہوں اور ان سب سے زیادہ میں میڈم نور جہاں کی عزت کرتا ہوں نور جہاں فیملی سے پیار اور عزت کرنے کی وجہ بھی نور جہاں ہیں ہیں ان ہی کی وجہ سے میں ان سب کی عزت اور پیار کرتا ہوں-

گلوکار نے کہا کہ جن صاحب نے بھی ویڈیو لگائی ہے وہ ایڈٹ کرکے لگائی ہے، ویڈیو کا کچھ حصہ پوسٹ کیا گیا ہے، ملکہ ترنم کے حوالے سے جو بات کی ہے وہ بات بالکل سچ ہے، میں نے اپنے بچپن کے بارے میں بات کی ہے اس زمانے میں صرف پی ٹی وی چلتا تھا، اس وقت نور جہاں کی پریزنٹیشن اچھی نہیں تھی-

علی عظمت نے اپنے پیغام میں کہا کہ پی ٹی وی پر نور جہاں کو جیسے دکھایا جاتا تھا وہ بالکل اچھا نہیں لگتا تھا مگر بعد میں جب ہم بڑے ہوئے تو ہمیں نور جہاں سے زیادہ پسند ہی کوئی نہیں تھا، اس حوالے سے مختلف فنکار بھی گواہی دیں گے کہ ہم نور جہاں اور ان کی گائیکی کو بہت پسند کرتے تھے۔