fbpx

سیلاب سے ہونے والی 1500 اموات میں 500 سے زیادہ بچے بھی شامل

سیلاب زدہ علاقوں میں بچوں بالخصوص نوزائیدہ بچوں اور حاملہ خواتین کو غذائیت کی کمی سے بچانے کی اشد ضرورت ہے

این آر ایف سی اجلاس،پاک فوج سمیت دیگر سیلاب متاثرین کی مدد میں مصروف

ڈپٹی چیئرمین احسن اقبال کی زیر صدارت نیشنل فلڈ ریسپانس کوآرڈی نیشن سینٹر کا کا اجلاس ہوا

صوبائی چیف سیکریٹریز، ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹیز کے ڈائریکٹر جنرلز بذریعہ ویڈیو لنک شریک ہوئے اجلاس میں سیلاب متاثرہ علاقوں کی تازہ ترین صورتحال کا جائزہ لیا گیا،قمبرشہداد کوٹ، جیکب آباد،لاڑکانہ، خیر پور، دادو، نوشہرو فیروز، ٹھٹھہ اور بدین سب سے زیادہ متاثر ہوئے کوئٹہ،نصیرآباد،جعفر آباد،جھل مگسی،بولان،صحبت پور اور لسبیلہ زیادہ متاثر ہوئے دیر ،سوات،چارسدہ،کوہستان،ٹانک اور ڈیرہ اسماعیل خان متاثر ہوئے،پنجاب میں ڈیرہ غازی خان اور راجن پور متاثرہ علاقوں میں سر فہرست ہیں

این ایف آر سی  کے مطابق سیلاب متاثرین کے انخلا کے لیے آرمی ایوی ایشن کے ہیلی کاپٹرز کی اب تک 569 پروازیں ہوئیں 24گھنٹےکے دوران 12 پروازوں کی مدد سے 18.4 ٹن راشن متاثرین کو پہنچایا گیا،آرمی ایوی ایشن کے ہیلی کاپٹرز اب تک 4653 متاثرین کوریسکیو کر چکے ہیں،سندھ، جنوبی پنجاب اور بلوچستان میں پاک فوج کے147 ریلیف کیمپس کام کر رہے ہیں،پاک فوج کے 220 ریلیف آئٹمز کولیکشن پوائنٹس پر امدادی اشیا کی وسولی اور تقسیم بھی جاری ہے

متحدہ عرب امارات کے حکام کا آرمی چیف سے رابطہ،سیلاب زدگان کیلیے امداد بھجوانے کا اعلان

سیلابی پانی کے بعد لوگ مشکلات کا شکار ہیں کھلے آسمان تلے مکین رہ رہے ہیں

پاک بحریہ کے 4 فلڈ ریلیف کوآرڈی نیشن سینٹر اور 18 سینٹرل کولیکشن پوائنٹس بھی متحرک ہیں اندرون سندھ میں پاک بحریہ کے 2 ہیلی کاپٹر بھی مصروف عمل ہیں،پاک بحریہ کے ہیلی کاپٹرزنے 62 پروازوں کی مدد سے 475 افراد کو ریسکیو کیا ،پاک نیوی کے ہیلی کاپٹرز کی مدد سے 4811 پیکٹس راشن بھی تقسیم کیا گیا،پاک فضائیہ کی جانب سے اب تک 4853 خیمے تقسیم کئے گئے ہیں

فورم کو انسانی زندگیوں، لائیو اسٹاک اور انفراسٹرکچر کو ہونے والے نقصانات پر بریفنگ دی گئی، نیشنل کوآرڈینیٹر میجر جنرل ظفر اقبال نے سندھ کے سیلاب زدہ علاقوں کے دورے اور فضائی جائزے کے متعلق آگاہ کیا اور کہا کہ موجودہ سیلاب ملکی تاریخ کا بدترین تباہ کن سیلاب ہے، موجودہ سیلاب 2010 کے سیلاب سے کئی گنا زیادہ تباہی لایا سیلاب سے متاثر ہونے والے 33 ملین افراد میں 16 ملین بچے ہیں،3 کروڑ 40 لاکھ سے زیادہ بچوں اور بچیوں کو لائف سیونگ سپورٹ کی فوری ضرورت ہے،سیلاب سے ہونے والی 1500 اموات میں 500 سے زیادہ بچے بھی شامل ہیں،سیلاب زدہ علاقوں میں بچوں بالخصوص نوزائیدہ بچوں اور حاملہ خواتین کو غذائیت کی کمی سے بچانے کی اشد ضرورت ہے سندھ میں بالخصوص کھڑے پانی سے پھیلنے والی بیماریوں کا زیادہ خطرہ منڈلا رہا ہے، ڈینگی اور ہیضہ جیسی وبائوں کو روکنے کے لئے ہنگامی اقدامات کی ضرورت ہے،نقصانات کا اندازہ لگانے کے لئے مشترکہ سروے جنگی بنیادوں پر مکمل کیا جائے،سروے کے بعد موسم سرما سے پہلے عملی اقدامات کو یقینی بنایا جائے،این ایف آر سی سی نے ہنگامی بنیادوں پر افراسٹرکچی کی بحالی کا بھی تفصیلی جائزہ لیا

وزارتِ فوڈ سیکورٹی نے این ایف آر سی سی کو تفصیلی بریفنگ دی اور کہا کہ ملک میں گندم کے وافر ذخائر موجود ہیں۔
وفاق اور صوبوں میں گندم کی مطلوبہ مقدار موجود ہے۔ گندم کی قومی طلب کے مطابق ذخائر موجود ہیں۔ وزارت فوڈ سیکورٹی نےNFRCCکو بتایا کہ گندم کی فراہمی اور ترسیل کو ہر صورت ممکن بنایا جائے گا۔

سیلاب سے اموات،نقصانات ہی نقصانات،مگر سیاستدان آپس کی لڑائیوں میں مصروف، مبشر لقمان پھٹ پڑے

عمران خان نے کل اداروں کے خلاف زہر اگلا ہے،وزیراعظم

پاک فوج کی ٹیمیں ریلیف آپریشن میں انتظامیہ کی بھرپورمدد کر رہی ہیں،وزیراعلیٰ

وزیراعظم فلڈ ریلیف اکاؤنٹ 2022 میں عطیات جمع کرانے کی تفصیلات

باغی ٹی وی بلوچستان کے سیلاب متاثرین کی آواز بن گیا ہے.

،پی ٹی آئی کے جلسہ کے موقع پر چارسدہ فاروق اعظم چوک میں سیلاب زدگان نے احتجاجی مظاہرہ کیا