برہان وانی کا قریبی اور آخری کارکن شہید کر دیا، بھارت کا دعویٰ

بھارت نے مقبوضہ کشمیر کے علاقے شوپیاں میں تین کشمیریوں کو شہید کر دیا ہے اور دعویٰ کیا ہے کہ حزب المجاہدین کے کمانڈر برہان وانی شہید کے قریبی دوست اور آخری کارکن کو شہید کر دیا ہے.

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق شوپیاں میں سرچ آپریشن کے دوران بھارت نے تین کشمیری نوجوانوں‌کو شہید کیا ہے جن کی شناخت مولوی طاریق ساکنہ مولو چھترا گام اورشارق نینگرو ساکنہ چھوٹی گام شوپیان ،لطیف احمد ڈار کے نام سے ہوئی. بھارت سرکار نےد عویٰ کیا ہے کہ لطیف احمد ڈار عرف لطیف ٹائیگر ساکنہ ڈوگری پورہ پلوامہ کا رہائشی ہے جو سال 2014سے کشمیر میں سرگرم تھا اور برہان گروپ کا آخری زندہ رکن تھا۔ برہان مظفروانی حزب المجاہدین کا کمانڈر تھا جسے بھارتی فوج نے جولائی 2016 میں شہید کیا تھا جس کے بعد کشمیر کی تحریک میں تیزی آئی تھی.

بھارتی فوج نے شوپیاں کے علاقے امام صاحب میں سرچ آپریشن کےد وران تین کشمیریوں کو شہید کیا تو کشمیری بڑی تعداد میں گھروں سے باہر نکل آئے اور بھارتی فوج کے خلاف احتجاج کیا، اھتجاج کے دوران بھارتی فورسز نے کشمیری مظاہرین کو منتشر کرنے کے لئے پہلے آنسو گیس کے شیل پھینکے کشمیری پھر بھی احتجاج کرتے رہے جس کے بعد بھارتی فوج نے کشمیریوں پر پیلٹ گن سے فائر کئے ،دوران احتجاج پیلٹ گن سے 17 کشمیری زخمی ہو گئے. جنہیں طبی امداد کے لئے سرینگر کے ہسپتال منتقل کر دیا گیا .ایک زخمی کی شناخت مدثر احمد نامی ایک نوجوان کے طور ہوئی ہے جس کی ٹانگ میں گولی لگی ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.