ہریانہ میں مضحکہ خیز” آپریشن میڈم جی”

بھارتی خفیہ اداروں کی نشاندہی پر ریاست ہریانہ کے شہرریواڑی میں ملٹری انجینئرنگ سروسز کے ایک سویلین ملازم کو گرفتار کر لیا گیااور اس پرمضحکہ خیز الزام لگایا گیا کہ وہ گزشتہ ڈھائی سال سے پاکستان کی ملٹری انٹیلی جنس سے تعلق رکھنے والی ایک اہم خاتون سےفیس بک پر رابطے میں ہے اور انہیں اہم نوعیت کی معلومات فراہم کرتا رہا ہے۔ یہاں یہ بات بھی اہم ہے کہ ہریانہ کے مہیش کمار کو لکھنئو ملٹری انٹیلی جنس کی نشاندہی پر ہریانہ پولیس کی اسپیشل ٹاسک فورس نے گرفتار کیا ہے جب کہ ہریانہ کے انٹیلی جنس ادارے ڈھائی سال تک مہیش کے رابطوں سے بے خبر رہے جب کہ مہیش پر یہ بھی الزام ہے کہ وہ مبینہ طور پر پاکستان ملٹری انٹیلی جنس سے کئی مواقع پررقم بھی وصول کرتا رہا۔ہریانہ پولیس نے مہیش کے کمپیوٹر اور اس کا موبائل فون قبضہ میں لے کر کارروائی شروع کر دی ہے جب کہ اسے ” آپریشن میڈم جی” کا نام دیا گیا ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.