fbpx

آکسفورڈ یونیورسٹی کے طلبہ کا ملکہ الزبتھ کی پورٹریٹ ہٹانے کا فیصلہ

آکسفورڈ یونیورسٹی کے گریجویٹ طلبہ نے ادارے سے ملکہ الزبتھ کی تصویر ہٹانے کا فیصلہ کرلیا۔

باغی ٹی وی : واشنگٹن پوسٹ کے مطابق Magdalen کالج کے کامن روم میں نصب پورٹریٹ ہٹانے کی قرارداد امریکی طالب علم میتھیو نے پیش کی تھی ملکہ کو نوآبادیاتی تاریخ کی علامت ٹھہرایا تھا۔

الزبتھ کی تصویر ہٹانے کے لیے ووٹنگ کی گئی جس میں دس طلبہ نے حق میں دو نے مخالفت میں ووٹ دیا جبکہ پانچ غیرحاضر رہے۔


برطانیہ کے وزیر تعلیم نے طلبہ کے اس اقدام پر شدید ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ملکہ نہ صرف ریاست کی سربراہ ہیں بلکہ برطانیہ میں جو سب سے بہترین ہے اسکی علامت بھی ہیں۔

وزیر تعلیم کا کہنا تھا کہ ملکہ نے برداشت، جامعیت اور احترام سے متعلق برطانوی اقدار دنیا بھر میں عام کی ہیں۔

دوسری جانب کالج کی صدر بیرسٹر روز نے طالبعلموں کے حق میں بات کرتے ہوئے کہا کہ طلبہ نے سن 2013 میں پورٹریٹ نصب کی تھی، اب طلبہ ہی نے اسے ہٹانے کا فیصلہ کیا ہے۔