پاک ایران وزراء تجارت کی مشترکہ کمیٹی کا آٹھواں‌ اجلاس، اقتصادی و تجارتی تعلقات فروغ دینے پر اتفاق

پاک ایران وزرا تجارت کی مشترکہ کمیٹی کا آٹھواں اجلاس ہوا ہے. مشیر تجارت عبد الرزاق داؤد نے کہا ہے کہ پاکستان، ایران کے ساتھ اقتصادی اور تجارتی تعلقات کافروغ چاہتا ہے، باہمی تجارت کے فروغ کے لیے ایران تجارتی روکاٹیں دور کرے،

باغی ٹی وی کی رپورٹ‌ کےمطابق مشترکہ اعلامیہ میں‌ کہا گیا ہے کہ ایران کی پاکستان کو تجارت کے لیے مزید بارڈر پوائنٹ کھولنے کی درخواست کی گئی ہے. ایران نے چاول کی جلد درآمد کے لیے پاکستان سے تجاویز مانگ لیں ہیں. ایران نے پاکستان سے5 لاکھ ٹن چاول درآمد کرنے میں دلچسپی کا اظہار کر دیا ہے.

مشیر تجارت نے کہاکہ زرعی مصنوعات ، فوڈآئٹم، فارماسوٹیکل سے باہمی تجارت کوفروغ دیا جا سکتا ہے، بارٹرٹریڈ میں پاکستان، ایران کو گندم ،چاول ،چینی،پھل برآمد بڑھا سکتا ہے، ایران نے بارٹر ٹریڈ کے لیےکمیٹی بنانےکی تجویز دے دی ہے. پاکستان کا ایران سے روڈ اور لوڈ ٹیکس ختم کرنے کا مطالبہ کیا ہے. تجارتی سامان لے کر ایران جانے والی گاڑیوں پر روڈ اور لوڈ ٹیکس ختم کیا جائے. ایرانی وزیر تجارت رضا رحمانی نے کہا ہے کہ ایران تجارتی روکاٹوں کو دور کرے گا، ہمسایہ ممالک ہونے کے ناطے موجودہ باہمی تجارت کو بڑھانا ہو گا،دو طرفہ تجارت کے فروغ سے دونوں ممالک کے عوام کو فائدہ ہو گا،

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.