ورلڈ ہیڈر ایڈ

پاکستان کو درپیش 80 فیصد مسائل کا حل مضبوط بلدیاتی حکومتوں کا قیام ہے، مصطفیٰ کمال

پاک سرزمین پارٹی کے چیئرمین سید مصطفیٰ کمال نے کہا کہ آئین پاکستان ہر شہری کے حقوق کا ضامن ہے اور اسی کے ذریعے عوامی مسائل کا حل چاہتے ہیں،

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق آئین میں بلدیاتی حکومتوں کے حوالے سے کوئی باب موجود نہیں اور اب ملک کو آگے صحیح سمت میں لے کر جانے کے لیے اس وضاحت کی ضرورت ہے کہ بلدیاتی حکومتوں کا دائرہ کار کیا ہوگا اور انکے اختیارات کیا ہونگے جیسے کہ وفاقی اور صوبائی حکومتوں کے حوالے سے مکمل رہنمائی آئین پاکستان میں موجود ہے، ان خیالات کا اظہار انہوں نے پاکستان ہاؤس میں سندھ بار کونسل کے وفد سے ملاقات میں کیا، وفد کے شرکاء میں ایڈوکیٹ عبدالوہاب انصاری، ایڈوکیٹ عرفان احمد صادقی، ایڈوکیٹ وحید اعظم خان تنولی شامل تھے۔ اس موقع پر رکن نیشنل کونسل ایڈوکیٹ حسان صابر بھی سید مصطفیٰ کمال کے ہمراہ موجود تھے۔ ملاقات میں ملک کی مجموعی سیاسی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا اور بالخصوص کراچی کی عوام کو درپیش مسائل اور ان کے حل پر گفتگو کی گئی۔ اس موقع پر سندھ بار کونسل کے وکلاء نے پی ایس پی کا بھرپور ساتھ دینے کے عزم کا اظہار کیا،

سید مصطفیٰ کمال نے کہا کہ کراچی کی سڑکوں کی تعمیر کے فیصلے لاڑکانہ یا اسلام آباد سے نہیں ہونے چاہیے جیسے اسلام آباد، لاڑکانہ یا کوئٹہ کی سڑکوں اور سیوریج لائنوں کے فیصلے کراچی سے نہیں ہو سکتے، پاکستان کو درپیش 80 فیصد مسائل کا حل مضبوط بلدیاتی حکومتوں کا قیام ہے، ہم صرف کراچی کی بات نہیں کر رہے بلکہ پورے ملک کو اپنا سمجھتے ہیں اور کراچی سے کشمیر تک عوامی مسائل کے حل کے لیے آواز اٹھا رہے ہیں، بچہ چاہے کراچی میں جاہل بڑا ہو یا کوئٹہ اور پشاور میں نقصان ہمارا ہے،

انہوں نے کہاکہ اسی طرح علاج کی سہولیات ملک کے کسی بھی حصے میں میسر نہ ہونے کی وجہ سے مرنے والا بچہ بھی اسی قوم کا ہے جو آگے چل کر پاکستان کے لیے اثاثہ ثابت ہو سکتا تھا،

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.