fbpx

پاکستان میں کرونا کیسز میں تیزی، مزید 78 اموات

پاکستان میں کرونا کیسز میں تیزی، مزید 78 اموات

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق پاکستان میں کرونا کی تیسری لہر جاری ہے، کرونا مریضوں اور اموات میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے

کرونا وائرس سے پاکستان میں مزید 78 اموات اور 4 ہزار757 نئے مریض سامنے آئے ہیں۔ این سی او سی کے مطابق کورونا کی تیسری لہر کے دوران پاکستان میں مثبت کیسزکی شرح10.8 فیصد ہے پاکستان میں کورونا سے اموات کی مجموعی تعداد 14 ہزار434 تک پہنچ گئی ہے جبکہ مریضوں کی مجموعی تعداد 6 لاکھ67 ہزار957 ہو گئی ہے۔ پاکستان میں کرونا کے ایکٹو کیسز کی تعداد 50ہزار397 ہے اور 6 لاکھ3ہزار126 افراد کورونا سے صحتیاب ہو چکے ہیں۔

این سی او سی کے مطابق کورونا سے پنجاب میں 6 ہزار365 اموات، سندھ میں 4 ہزار497، خیبر پختو نخوا 2 ہزار342، اسلام آباد568، گلگت بلتستان 103، بلوچستان میں 207 اور آزاد کشمیر میں 352 افراد جان کی بازی ہار چکے ہیں۔اسلام آباد میں کورونا کیسزکی تعداد 57 ہزار833، خیبر پختونخوا 87ہ زار55، سندھ 2 لاکھ 65 ہزار433، پنجاب 2 لاکھ 20 ہزار392، بلوچستان 19 ہزار557، آزاد کشمیر 12 ہزار663 اور گلگت بلتستان میں5ہزار24 افراد کورونا سے متاثر ہوچکے ہیں۔

این سی او سی جانب سے پاکستان کے 26 اضلاع ہائی رسک قرار دیئے گئے ہیں۔لاہور، فیصل آباد، گوجرانوالہ، بہاولپور، منڈی بہاؤالدین، ملتان، اوکاڑہ، رحیم یار خان، راولپنڈی، گجرات، شیخوپورہ، سرگودھا، سیالکوٹ، ٹوبہ ٹیک سنگھ متاثر، مظفر آباد، میر پور، کوٹلی، پشاور، سوات، نوشہرہ ، دیر لوئر، مالاکنڈ، صوابی، چارسدہ اور ہری پور ہائی رسک اضلاع میں شامل ہیں

قبل ازیں حکومت کی جانب سے ایس او پیز جاری کی گئی ہیں جس کے مطابق ملک میں کورونا کی تیسری لہر کے پیشِ نظر حکومت کے وضع کردہ ایس او پیز پر سختی سے کاربند رہیں۔ ماسک کا استعمال کریں، بار بار ہاتھوں کو 20 سیکنڈ تک صابن سے دھوئیں۔ گھروں کو ہوادار بنائیں اور بلا ضرورت ہرگز گھر سے باہر نہ نکلیں۔ پُرہجوم جگہوں پر جانے سے گریز کریں۔

کرونا وائرس سے کس ملک کے فوج کے جنرل کی ہوئی موت؟

کرونا مریضوں کے علاج کیلئے یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز کو ملی بڑی کامیابی

کرونا کو ووہان وائرس کہنا درست،کرونا انسان کا بنایا ہوا، سابق ایم آئی 6 کے چیف کا دعویٰ

چین میں کرونا نے ایک بار پھر خطرے کی گھنٹی بجا دی

پنجاب میں ماسک پہننے کو لازمی قرار دِیا گیا ہے ، ماسک نہ پہننے والوں کے خلاف کارروائی عمل میں لائی جائے گی اور جرمانے کے علاوہ چھ ماہ قید بھی ہو سکتی ہے۔ وزیراعلیٰ پنجاب کی معاون خصوصی برائے اطلاعات ڈاکٹرفردوس عاشق اعوان کا کہن اتھا کہ پنجاب حکومت این سی او سی کی ہدایت پر مکمل عمل کر رہی ہے، صوبے میں کورونا وائرس کی صورتحال خطرناک ہو گئی ہے، گجرات اور گوجرانوالہ کے ہسپتالوں میں مریضوں کی تعداد سب سے زیادہ ہے۔ صوبے بھر میں ماسک پہننا لازمی قرار دیدیا گیا ہے اور خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف قانونی کارروائی ہو گی۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.