fbpx

پاکستان نے مودی کے دورہ مقبوضہ کشمیر کو مسترد کر دیا

پاکستان نے 24 اپریل کے بھارتی وزیر اعظم کے مقبوضہ جموں و کشمیر کے دورے کو مسترد کر دیا ہے-

باغی ٹی وی : ترجمان دفتر خارجہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ 5 اگست 2019 کے بعد سے عالمی برادری نے مقبوضہ کشمیر میں بھارت کی جانب سے ایسی کئی مایوس کن چالوں کا مشاہدہ کیا جن کا مقصد اصل بنیادی مسائل سے عالمی توجہ ہٹانا ہے۔

بھارتی وزیراعظم کے دورہ مقبوضہ کشمیر کے خلاف دنیا بھر میں احتجاجی مظاہرے اورریلیاں

ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق بھارتی وزیر اعظم نے بڑے حفاظتی حصار میں جموں کا مختصر دورہ کیا جبکہ مقبوضہ کشمیر کے لوگ بھارتی قبضے کے خلاف یوم سیاہ منا رہے تھے۔

ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ پاکستان مقبوضہ کشمیر میں میں دریائے چناب پر بھارتی پن بجلی منصوبے کے سنگ بنیاد رکھنے کی بھی شدید مذمت کرتا ہے ریٹل پن بجلی منصوبے کا بھارتی ڈیزائن پاکستان کی طرف سے متنازعہ رہا ہے کوار ہائیڈرو الیکٹرک پلانٹ کے لیے بھارت نے اب تک پاکستان کے ساتھ معلومات کا تبادلہ نہیں کیا۔بھارتی وزیر اعظم کی طرف سے دونوں منصوبوں کا سنگ بنیاد سندھ طاس معاہدے کی خلاف ورزی ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز بھارتی وزیر اعظم نے مقبوضہ کشمیر کا دورہ کیا، آرٹیکل 370 کے خاتمے کے بعد نریندر مودی کا مقبوضہ وادی کا یہ پہلا دورہ تھا-

مودی کا مقبوضہ کشمیرکا دورہ کشمیریوں کے زخموں پر نمک پاشی کے مترادف ہے،مشعال ملک

بھارتی وزیراعظم کے دورہ مقبوضہ جموں وکشمیر کے خلاف آزاد جموں و کشمیر کے مختلف اضلاع میں احتجاجی مظاہرے اورریلیاں نکالی گئیں مودی کے متنازعہ دورے کیخلاف مظفرآباد میں پاسبان حریت کے زیر اہتمام دھرنا دیا گیا مودی مخالف دھرنے کی قیادت چیئرمین پاسبان حریت عزیراحمدغزالی،پیپلزپارٹی کے رہنما شوکت جاوید میر،عثمان علی ہاشم اور جاوید احمد مغل نے کی-

برہان وانی شہید چوک میں شہریوں کی بڑی تعداد نے مودی مخالف دھرنے میں شرکت کی دھرنے کے شرکاء نے ہاتھوں میں سیاہ پرچم لہرائے اور ”گو مودی گو بیک”کے نعرے لگا ئے علاوہ ازیں ” مودی کو روک دو”،” جموں وکشمیر آزادی چاہتا ہے” کے نعرے درج تھے-

ریاست کے دونوں اطراف آج کشمیری یوم سیاہ منائیں گے،وزیر اعظم آزاد کشمیر