fbpx

کچھ پاکستانی سلیبریٹیز کشمیری مظالم پر ابھی تک خاموش

اگرچہ کچھ پاکستانی سلیبریٹیز نے مسئلہ کشمیر کے بارے میں آواز اٹھائی ہے ، دوسروں نے خاموشی اختیار کر رکھی ہے۔
مقبوضہ کشمیر: بھارتی فوجیوں کے مظالم جاری ، مختلف علاقوں میں 9 کشمیری شہید کردیئے
تفصیلات کے مطابق بھارتی حکومت ریاستی دہشت گردی کے ذریعے کشمیری عوام کی آواز کو دبا رہی ہے۔ پوری دنیا سے لوگ مودی حکومت کی بھرپور مذمت کر رہے ہیں۔زیادہ تر پاکستانی سلیبریٹیز مظلوم کشمیری بھائیوں کی حمایت کر رہی ہیںلیکن ابھی بھی کچھ پاکستانی خاموش ہیں۔ لگتا ہے کہ وہ شخصیات ہندوستانی شائقین کو تکلیف نہیں پہنچانا چاہتیں۔

ان میں سے ایک نام سابق پاکستانی کپتان شعیب ملک کا ہے ۔ ان کی بیوی ثانیہ مرزا بھارت کی شہری ہیں۔ شائد شعیب ملک اپنی بیوی کو دکھ نہیں دینا چاہتے۔ابھی تک شعیب ملک نے بھارتی مظالم کے بارے میں ایک لفظ بھی نہیں بولا۔

دوسری طرف سنگر عاطف اسلم نے بھارتی ریاستی دہشت گردی پر چپ سادھ رکھی ہے۔ عاطف اسلم اس سال حج کے لیے گئے تھے۔ ایک اور مشہور سلیبریٹی حمزہ علی عباسی حج سے واپس آنے کے بعد مظلوم کشمیری عوام کے حق میں مسلسل ٹوئٹس کر رہے ہیں۔

پاکستانی قوال راحت فتح علی خان کشمیرکے مسئلہ پر بے حس ہیں۔ قوال نے کشمیریوں کے لیے ابھی تک آواز بلند نہیں کی۔ شائد اس لیے کہ قوال نے بھارت کے ذریعے بہت زیادہ شہرت پائی ہے۔لیکن اس کا یہ مطلب بھی نہیں کہ کشمیر میں ہونے والی غیر انسانی حرکتوں کو نظرانداز کر دیا جائے۔

گلوکار شفقت امانت علی خان بھی ان پاکستانی شخصیات میں شامل ہیں جنہوں نے بھارتی ظلم وجبر اپنے لب سی رکھے ہیں۔شائد وہ اس وجہ سے خاموش ہوں کہ بھارت میں موسیقی کا مستقبل روشن ہے۔

اب وقت آ گیا ہے کہ ہر پاکستانی خواہ اس کا تعلق کسی بھی شعبہ ہائے زندگی سے ہوہ کشمیر میں ہونے والی ناانصافی کے بارے میں اپنی آواز بلند کرے۔