آذربائیجان میں پاکستانی پرچم کی ڈیمانڈ بڑھنے لگی

آذربائیجان میں پاکستانی پرچم کی ڈیمانڈ بڑھنے لگی

آذربائیجان اور آرمینیا کاراباخ کے علاقے میں گزشتہ تین ہفتوں سے حالتِ جنگ میں ہیں ۔اس سلسلے میں پاکستان نے شروع دن سے آذربائیجان کی حمایت کا اعلان کر رکھا ہے۔گزشتہ روز آذربائیجان کے موقع پر وزیراعظم پاکستان عمران نےآذری صدر اور عوام کو مبارکباد کا پیغام دیا ، وزیراعظم نے کہا کہ علاقائی سالمیت کا دفاع کرنے پر آذربائیجان فوج کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں ۔

آذربائیجان نےایک اورعلاقے پرکنٹرول حاصل کرلیا،اب فضولی شہرکی مساجد سے پانچ وقت اذانوں کی آوازیں‌ گونجیں گی:صدرآذربائیجان


پاکستان کی اسی بے لوث حمایت پر آذربائیجان میں کبھی گھروں کی بالکنیوں پر اور کبھی واشنگٹن میں آرمینیا کیخلاف مظاہرے کے دوران پاکستان کے پرچم لہرائے گئے۔

آرمینیا سے آزاد کرائے گئے علاقے میں اللہ اکبر کی صدائیں گونج اٹھیں


خیال رہےکہ نگورنوکارا باخ کے تنازعے پر آذربائیجان اور آرمینیا میں گذشتہ 3 ہفتوں سے جاری جھڑپوں میں شدت آتی جارہی ہے اور اب تک دونوں جانب کے سیکڑوں افراد مارے جاچکے ہیں۔

دونوں ممالک نگورنو کارا باخ کے علاقے پر اپنی ملکیت کا دعویٰ کرتے ہیں تاہم نگورنو کاراباخ کا علاقہ باضابطہ اور عالمی طور پر تسلیم شدہ آذربائیجان کا حصہ ہے لیکن آرمینیا کے نسلی گروہ نے 1990 کی جنگ میں آرمینیا کی مدد سے یہاں قبضہ کرلیا تھا اور اب یہ آرمینیائی فوج کے کنٹرول میں ہے۔

آرمینی اور آذربائیجان کی فوجوں کے درمیان اکثر اس علاقے میں جھڑپوں کا سلسلہ جاری رہتا ہے، رواں سال جولائی میں بھی اسی طرح کے ایک تصادم میں دونوں جانب کے 15 افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.