fbpx

پناہ گاہوں کا سیاست سے کوئی تعلق نہیں،وزیراعظم

وزیرِ اعظم عمران خان سے معاونِ خصوصی برائے تخفیفِ غربت و سماجی تحفظ ڈاکٹر ثانیہ نشتر کی ملاقات ہوئی ہے

ملاقات میں ایم ڈی بیت المال، چیرمین سی ڈی اے اور متعلقہ افسران نے بھی شرکت کی،ملاقات میں وزیرِ اعظم کو پناگاہوں کی صورتحال اور بہتری کیلئے بنائے گئے جامع منصوبے پر بریفنگ دی گئی. بریفنگ میں بتایا گیا کہ منصوبے پر تین مرحلوں میں عملدرآمد کیا جائے گا.منصوبے کے مطابق موجودہ پناہ گاہوں میں سہولیات کی فراہمی میں بہتری لائی جائے گی. نجی بین الاقوامی ہوٹل سے پناہ گاہوں کے عملے کو تربیت فراہم کی جائے گی. پالیسی پر عملدرامد کیلئے ایک مرکزی بورڈ اور انتظامی معاملات کو دیکھنے کیلئے ہر پناہ گاہ میں 4 رکنی بورڈ تشکیل دیا جائے گا.سہولیات کے حوالے سے ڈیجیٹل ڈیش بورڈ بنایا جائے گا جو نگرانی میں مدد کرے گا. ڈیش بورڈ کو موبائل کے ذریعے با آسانی چلایا جا سکے گا.موجودہ پناہ گاہوں میں مسائل کی نشاندہی کرکے ان کو حل کیا جائے گا. پناہ گاہوں کو اس مقصد کیلئے تعمیر کی گئیں عمارتوں میں منتقل کرنا بھی منصوبے کا حصہ ہے.پناہ گاہوں کے ساتھ احساس ون ونڈو سینٹر بھی کھولے جائیں گے. ون ونڈو سینٹر کے ذریعے پناہ گاہوں میں مقیم اہل افراد کو احساس کے تحت دیگر دوسرے پروگرامز سے سہولیات لینے میں آسانی ہوگی.

@MumtaazAwan

وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ جن پناہ گاہوں پر لوگوں کا رش ہے ان پر خصوصی توجہ دی جائے.پناہ گاہوں کا سیاست سے کوئی تعلق نہیں. اس کا تعلق اللہ اور اس کی مخلوق کی خدمت سے ہے. پناہ گاہوں کا مقصد معاشی طور پر غریب طبقےکے لوگوں کے وقار کو مجروح ہونے سے بچانا ہے. پناہ گاہوں سے پہلے غریب مزدور سڑکوں پر سونے پر مجبور تھے.منصوبے کے مطابق مثالی پناہ گاہوں کا قیام جلد عمل میں لایا جائے.

احساس لنگر کا وزیراعظم عمران خان نے کیا افتتاح

بلاول سے کب تک محبت رہے گی؟ شیخ رشید نے دلی خواہش بتا دی

پناہ گاہوں کی مزید بہتری کے لئے وزیراعظم نے دیں ہدایات