fbpx

ن لیگ کی دلیل پرقربان:2028میں الیکٹرانک ووٹنگ جائز :اب نہیں:کیوں؟پارلیمنٹ کافیصلہ مقدم ہوگا:فرخ حبیب

فیصل آباد:ن لیگ کی دلیل پرقربان جاوں:2028 میں الیکٹرانک ووٹنگ ٹھیک ہوگی،اب نہیں:کیوں ؟پارلیمنٹ کا فیصلہ مقدم ہوگا: ،اطلاعات کے مطابق وفاقی وزیرمملکت فرخ حبیب نے کہا ہے کہ ن لیگ مکاری بھی بڑی عجیب ہےکہ ہمیں کہا جاتا ہے کہ اگلے انتخابات یعنی 2028 میں الیکٹرانک ووٹنگ ہوگی اب نہیں ، کیا بقول ان کے یہ ٹیکنالوجی ٹھیک نہیں تو کیا 2028 میں‌ ٹھیک ہوجائے گی ، یہ سب ڈرامے اورچال بازیاں ہیں ، مختصر یہ کہ جوپارلیمنٹ فیصلہ کرے گی وہ مقدم ہوگا

وزیر مملکت اطلاعات فرخ حبیب نے فیصل آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہم شفاف اور غیر جانبدارانہ الیکشن چاہتے ہیں، ووٹر کو آگاہی دینا اور عملے کی تربیت بھی الیکشن کمیشن کا کام ہے، ماضی میں اوورسیز پاکستانیوں کو ووٹ کا حق دینے کیلئے اقدامات نہیں کیے گئے، اپوزیشن ماضی میں الیکشن کمیشن کو دھاندلی کا ذمہ دارقرار دے چکی۔ شفاف الیکشن کرانا الیکشن کمیشن کی ذمہ داری ہے۔

فرخ حبیب کا کہنا تھا کہ انتخابات میں جدید ٹیکنالوجی کا استعمال وقت کی ضرورت ہے، اس وقت ٹھپہ مافیا ای وی ایم کے راستےمیں حائل ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملکی برآمدات ریکارڈ سطح پر ہیں، آج ملک میں صنعتیں چل رہی ہیں۔ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ ن لیگ ایک طرف تو الیکٹرانک ووٹنگ پراعتراض کرتی ہے دوسری طرف کہتی ہے کہ 2023 کے انتخابات میں نہیں 2028 کے انتخابات میں اگرہماری حکومت آئی توپھرالیکٹرانک ووٹنگ ہوگی ، یہ کیا دہرا معیار ہے، ایسے ہرگز نہیں ہوسکتا ، جب پارلیمنٹ نے فیصلہ کرلیا تو پھرآئین کی بات ہوگی کسی کی خواہش پرنظام کوقربان نہیں کرسکتے

ادھر معاون خصوصی شہباز گل نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ تحریک انصاف ہر ادارے کا احترام کرتی ہے، مسلم لیگ (ن) نے پاکستان کے ہر ادارے پر حملہ کیا، ن لیگ کو الیکشن کمیشن کے دفاع کا دن رات درد اٹھ رہا ہے، یہ انتخابی اصلاحات کو روک کر دھاندلی کا سلسلہ جاری رکھنا چاہتے ہیں، پی ٹی آئی ان کی سازش کبھی کامیاب نہیں ہونے دے گی۔