fbpx

پاکستان اسپورٹس بورڈ کے ڈائریکٹر جنرل کی تعیناتی،عدالت نے کس سے کیا جواب طلب؟

پاکستان اسپورٹس بورڈ کے ڈائریکٹر جنرل کی تعیناتی،عدالت نے کس سے کیا جواب طلب؟

اسلام آبا د ہائیکورٹ میں پاکستان اسپورٹس بورڈ کے ڈائریکٹر جنرل کی تعیناتی کیس کی سماعت ہوئی

پاکستان ا سپورٹس بورڈ کے ڈائریکٹر جنرل کی تعیناتی اسلام آباد ہائی کورٹ میں چیلنج کی گئی ہے، عدالت نے وفاقی وزیر بین الصوبائی رابطہ و دیگر کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیا، عدالت نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ بورڈ کا اختیار ہے تو بورڈ نے ہی رولز بنائے ہیں اس میں کیا غلط ہے ؟وکیل درخواست گزار نے کہا کہ ڈی جی اسپورٹس بورڈ کی تعیناتی وفاقی حکومت کا اختیار ہے اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہرمن اللہ نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ وفاقی حکومت صرف بورڈ تشکیل دے سکتی ہے رولز نہیں بنا سکتی ،پاکستان ا سپورٹس بورڈ کے 2020 کے رولز درست ہیں ،عدالت نے وفاقی وزیر بین الصوبائی رابطہ و دیگر کو نوٹس جاری کرتے ہوئے 2ہفتے میں جواب طلب کر لیا

واضح رہے کہ وفاقی وزارت بین الصوبائی رابطہ نے پاکستان اسپورٹس بورڈ تشکیل دیا تھا، وزارت بین الصوبائی رابطہ کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن کے مطابق چیئرمین ہائیر ایجوکیشن کمیشن (ایچ ای سی) بھی پاکستان اسپورٹس بورڈ کے رکن مقرر کیے گئے ہیں

نوٹیفکیشن کے مطابق مینیجنگ ڈائریکٹر نیشنل انجینئرنگ سروسز پاکستان (نیسپاک) یا ان کے نمائندے بورڈ کے رکن ہوں گے، ایتھلیٹک فیڈریشن کے صدر اور سیکرٹری بھی پاکستان اسپورٹس بورڈ کے رکن مقرر کیے گئے ہیں۔

پاکستان فٹ بال فیڈریشن کے صدر، سیکرٹری اور سروسز اسپورٹس کنٹرول بورڈ کے صدر و سیکرٹری جب کہ پاکستان اولمپک ایسوسی ایشن کے صدر بھی بورڈ کے رکن مقرر کیے گئے ہیں۔ نوٹیفکیشن کے مطابق معروف کاروباری شخصیت عقل کریم ڈھیڈی سمیت شفیق احمد عباسی کو بھی پاکستان اسپورٹس بورڈ کا رکن مقرر کیا گیا ہے

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.