ورلڈ ہیڈر ایڈ

پاسداران انقلاب کی مالی معاونت پر امریکا نے عراقی کمپنی بلیک لسٹ کردی

امریکا نے ایران پرعاید کردہ اقتصادی پابندیوں کا دائرہ بڑھاتے ہوئےمزید ایک کمپنی اور دو کاروباری شخصیات کو بلیک لسٹ کردیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق امریکی وزارت خزانہ کی ویب سائیٹ پر پوسٹ ایک بیان میں کہا گیا ہےکہ واشنگٹن نے ایران سے منسلک دو شخصیات اور ایک ادارے پر نئی پابندیاں عاید کی ہیں۔
نئی پابندیوں کا سامنا کرنے والی کمپنی’جنوبی قدرتی وسائل’SWRC’ کا ہیڈ کواٹر عراق کےدارالحکومت بغداد میں ہے۔ یہ کمپنی ایرانی پاسداران انقلاب کی حمایت یافتہ ملیشیائوں کو کروڑں ڈالر مالیت کا اسلحہ اسمگل کرنے میں معاونت فراہم کرتی رہی ہے۔
‘SWRC’ اور اس کے دور عراقی شراکت داروں پر امریکی پابندیوں کوغیر موثر بنانے کے لیے پاسداران انقلاب کو عراق کے مالیاتی نظام تک رسائی دینے میں سہولت کاری کا بھی الزام ہے۔
اس منصوبے میں ایران کی سمندر پار کارروائیوں میں سرگرم القدس ملیشیا کے سربراہ قاسم سلیمانی کےمشیر ابومہدی المہندس بھی شامل ہیں۔ موصوف اسلحہ کی اسمگلنگ کے نیٹ ورک چلانے کے ساتھ مغربی سفارت خانوں میں دھماکے کرنے اور علاقائی شخصیات کی ٹارگٹ کلنگ میں ملوث پائے گئےہیں۔
امریکا نے ‘SWRC’ اور اس کے شراکت داروں کو عالمی دہشت گفردوں کی فہرست میں شامل کیا ہے جو عالمی سطح پر دہشت گردی کی کارروائیوں میں معاونت کے مرتکب پائے گئے ہیں۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.