fbpx

پہلی فلم کی ناکامی کا سوگ عالیہ بھٹ نے کیسے منایا؟

بالی وڈ اداکارہ عالیہ بھٹ کا شمار بھارتی سنیما کی سب سے زیادہ پسند کی جانے والی اداکاراؤں میں ہوتا ہے جو فلمی بزنس میں ایک دہائی مکمل کرنے والی ہیں۔ انہوں نے کرن جوہر کی ہدایت کاری میں بننے والی اسٹوڈنٹ آف دی ایئر سے ڈیبیو کیا جس میں عالیہ سدھارتھ ملہوترا اور ورون دھون کے ساتھ اداکاری کرتی دکھائی دیں.اس کے بعد انہوں نے آہستہ آہستہ وہ 2 اسٹیٹس، ہائی وے، اڑتا پنجاب، ڈیئر زندگی، رازی، گلی بوائے گنگو بائی کاٹھیواڑی میں اپنی صلاحیتوں کا لوہا منوایا.عالیہ اب صرف اداکارہ نہیں ہیں بلکہ پرڈیوسر بھی ہیں ان کی بطور پرڈیوسر فلم ڈارلنگز حال ہی میں ریلیز ہوئی ہے. عالیہ ایسی اداکارہ ہیں جنہوں نے اپنے کیرئر میں زیادہ تر کامیابی کا مزہ ہی چکھا ہے. عالیہ نے حال ہی میں ایک

انٹرویو دیا ہے اور بتایا ہے کہ جب ان کی پہلی ناکام ہوئی تو انہوں نے کیا کیا. عالیہ نے کہا کہ ان کی فلم ”شاندار” جب ناکامی سے دوچار ہوئی تو مجھے ایک جھٹکا لگا اور مجھے یقین ہی نہیں آرہا تھا کہ میری فلم ناکام ہو گئی ہے. فلم کی ناکامی کا سن کر میرا دل ٹوٹا ہوا تھا اس دوران میرے والد واحد وہ شخص تھے جن کے ساتھ میں نے اپنی تکلیف شئیر کی اور اس فلم کی ناکامی کا دکھ منانے کےلئے والد کے ساتھ چھٹیوں پر چلی گئی اس دوران کوئی کام نہ کیا . یہ میرے کیرئیر کی پہلی فلم تھی جو ناکام ہوئی تھی لیکن اس کے بعد میں نے خود کو سمجھایا کہ کام کروں گی تو کبھی کامیابی ملے گی اور کبھی نہیں.