پشاور:اجازت نہ ملنے کے باوجود پی ڈی ایم کا جلسہ جاری،شدت پسند انصارالاسلام کے کارکنان پولیس سے الجھنے لگے

پشاور: پشاور:اجازت نہ ملنے کے باوجود پی ڈی ایم کا جلسہ جاری،شدت پسند انصارالاسلام کے کارکنان پولیس سے الجھنے لگے،اطلاعات کے مطابق ایک طرف ملک میں کرونا وائرس کی تباہ کاریوں کی وجہ سے ملک میں بڑی بے چینی پائی جارہی ہے تودوسری طرف پی ڈی ایم تمام ترحفاظتی تدابیرپرعمل کرنے سے انکاری ہے ،

پشاور میں پی ڈی ایم نے ضلعی انتظامیہ کی جانب سے اجازت نہ ملنے کے باوجود جلسے کے لیے میدان سجا لیا ہے، مریم نواز، مولانا فضل الرحمان، بلاول بھٹو، ایمل ولی، آفتاب شیرپائو اور دیگر قائدین خطاب کریں گے، جلسہ گاہ کو جانے والے تمام راستے بند کردیئے گئے۔جلسہ میں گاہ میں 10 ہزارسے زائد کرسیاں لگائی گئی ہیں

پشاور سے اطلاعات کے مطابق مولانا فضل الرحمن کی شدت پسند تنظیم انصارالاسلام کے مسلّح کارکنان نے جلسہ گاہ کوگھیررکھا ہے ، ان کارکنان نے اپنی مخصوص یونیفارمز پہن رکھی ہیں‌ ، یہ بھی معلوم ہوا ہےکہ انصارالاسلام کے کارکنان پولیس سے الجھ رہے ہیں‌اوردھمکیاں کھلے عام دے رہے ہیں‌

جلسہ گاہ میں گہما گہمی عروج پرہے، کرسیاں لگا دی گئیں، اسٹیج بھی تیار ہے، پی ڈی ایم میں شامل اپوزیشن جماعتوں کے کارکنوں کی آمد کا سلسلہ بھی جاری ہے، قائدین کا کہنا ہے کہ موبائل سروس بند کرنا درست نہیں، جلسہ گاہ کی طرف آنے والے راستے بند کرنے سے کارکنوں کو روکا نہیں جاسکتا۔

دریں اثنا پی ڈی ایم قائدین کیلئے بلور ہاؤس میں ظہرانہ دیا گیا جس میں بلاول بھٹو زرداری، مریم نواز، شاہد خاقان، مولانا فضل الرحمان اور آفتاب شیرپاؤ سمیت دیگر رہنماوں نے شرکت کی۔اس ظہرانے میں یہ طئے پایا کہ حکومت کے خلاف ہرصورت جلسہ کیا جائے گا ورنہ حالات ہمارے ہاتھ سے نکل جائٰیں‌ گے

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.