ورلڈ ہیڈر ایڈ

پھلوں اور سبزیوں کے چھلکوں میں چھپے صحت کے راز

کئی پھل اور سبزیوں کے چھلکے غذائیت سے بھر پور ہوتے ہیں لہذا انہیں کوڑے کی ٹوکریوں کا ٹھکانہ بنانے کی بجائے کام میں لائیں چھلکے میں پھل کی بجائے تین چار گنا زیادہ غذائی ریشے ہوتے ہیں جو جسم سے زہریلے مادے خارج کرتے ہیں ان میں تکسیدہ مادے موجود ہوتے ہیں جو کہ جسمانی خلیوں کو تندرست توانا بناتے ہیں جبکہ چھلکوں میں شکر چکنائی اور حراروں کی مقدار بہت کم ہوتی ہے اس سے جسم ان غذائی مادوں سے محفوظ رہتا ہے جن کی زیادتی ہماری صحت خراب کر سکتی ہے وہ سبزیاں اور پھل جن کے چھلکے بہت کار آمد ہیں
سیب میں موجود پیشتر وٹامن معدنیات اور دیگر غذائی عناصر اس کے چھلکے میں پائے جاتے ہیں اسی لئے سیب ہمیشی چھلکے سمیت کھائیں سیب کے چھلکے میں وٹامن اے اور سی پاٹاشئیم کیلشئیم فاسفورس اور فولاد پائے جاتے ہیں اس میں ایک ریشہ پیکٹن پایا جاتا ہے جو خون میں کولیسٹرول کی سطح کم کرتا ہے

کینو اور مالٹا:
کینو مالٹے لیموں اور فروٹر وغیرہ کے چھلکے پھینک دئے جاتے ہیں جبکہ ان کے چھلکوں کی غذائی افادیت بہت زیادہ ہے ترش پھلوں پھلوں کے چھلکوں میں بھی وافر مقدار میں وٹامن سی ملتا ہے تازہ کینو اور مالٹے کے چھلکوں میں وٹامن اے بی جست کیچئیم میگنیشیم اور میگنیز بھی کافی مقدار میں پائے جاتے ہیں ان چھلکوں کو سکھا کر سفوف بنالیں یہ سفوف پھر مصالحے میں مال کر کھانے میں استعمال کریں یا سلاد پر چھڑک کر استعمال کریں

پیاز:
پیاز ایک عام استعمال ہونے والی سبزی ہے اس کے چھلکے میں کئی اقسام کے ضد تکسیدی مادے خاص طور پر کوئر ستین نامی کیمیائی مادے کا خزانہ ہے یہ مادہ خون کے دباؤ میں کمی کے ساتھ شریانوں میں چکنائی بھی نہیں جمنے دیتا

کیلا:
کیلے کا چھلکا بھی غذائیت سے بھر پور ہوتا ہے اس میں وافر مقدار میں پایا جانے والا پوٹاشیم معدن فشار خون کو کم کرتا ہے اور موڈ بہتر بناتا ہے اس میں حل پذیر ریشہ خراب کولیسٹرول سے نجات دلاتا ہے

تربوز:
تربوز کے گودے کے نیچے واقع سفید حصہ بھی غذائیت سے بھر پور ہے طبی ماہرین کے مطابق سفید حصے میں وٹامن بی اور سی وافر مقدار میں پائے جاتے ہیں اس کے ساتھ ہی اس میں سائٹرولین نامی کیمیائی مادہ بھی پایا جاتا ہے یہ ایک تیزاب ہے جو ہمارے بدن میں خون کی نالیوں کو صاف کرتا ہے تربوز کے سفید حصے کو بلینڈر میں سرخ گودے کے ساتھ پیس کر تھوڑی سی چینی ملا لیں تاکہ رس میٹھا ہو جائے

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.