fbpx

پی آئی اے نے مسافروں کا سُکھ چین چھین لیا:تاخیربھی اوربے رُخی بھی:معاملہ شدت اختیارکرگیا

لاہور:پی آئی اے نے مسافروں کا سُکھ چین چھین لیا:تاخیربھی اوربے رُخی بھی:معاملہ شدت اختیارکرگیا،اطلاعات کے مطابق پی آئی اے کی پرواز پی کے 304 اتنی زیادہ تاخیر کا سبب بنی کہ مسافروں کی چیخیں نکل گیں

اس حوالے سے سینئر صحافی مبشرلقمان جو کہ فضائی سفرکے امور کے ماہرجانے جاتے ہیں نے اس حوالے سے انکشاف کیا کہ آج پی کے 304 طیارے میں بیٹھے مسافروں کو 90 منٹ سے زائد تاخیر کا سامنا کرنا پڑا

 

ان کا کہنا تھا کہ ایک طرف تو مسافروں کو خوار کیا گیا اور دوسرا مسافروں کے ساتھ اس موقع پر تعاون بھی نہیں کیا گیا ،ان کا کہنا تھا کہ دکھ کی بات تو یہ ہے کہ اس دوران مسافروں کی طرف سے بار بارپوچھنے کے باوجود کوئی رہنمائی نہیں کی گئی

مبشرلقمان کہتے ہیں کہ ایسا لاپرواہ رویہ یقینی طور پر ایئر لائن کی شہرت کو داغدار کرتا ہے۔ ایک جرمن خاتون جو جرمن سفارتخانے سے تعلق رکھتی ہے کا کہنا ہے کہ پی آئی اے حکام کا رویہ غیرمناسب تھا

 

مبشرلقمان کہتے ہیں کہ پی آئی اے کا کوئی بھی اہلکار مسافروں کو یہ بتانے کے لیے نہیں ہے کہ فلائٹ کیوں اور کب تک تاخیر کا شکار ہے!

ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ کسی کو اندازہ نہیں اور نہ ہی کوئی ذمہ داری لے رہا ہے ٹریفک کے لوگ موقع سے غائب ہو گئے ہیں اور عملہ بتانے سے قاصر ہے کہ کیا ہو رہا ہے

ادھر یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ ایئرلائن کے اس رویے سے مسافربہت مایوس ہیں‌ اور ان کا کہنا تھا کہ اگر یہی رویے رہے تو ایئرلائن کا ستیا ناس ہوجائے گا