ورلڈ ہیڈر ایڈ

وزیراعظم نے ڈی جی ایف آئی اے کو ملاقات میں دیا بڑا حکم، شہزاد اکبر کو ملا ایک اور بڑا عہدہ

وزیراعظم نے ڈی جی ایف آئی اے کو ملاقات میں دیا بڑا حکم، شہزاد اکبر کو ملا ایک اور بڑا عہدہ

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق وزیراعظم عمران خان سے نئے تعینات ہونے والے ڈائریکٹر جنرل فیڈرل انویسٹی گیشن ایجنسی واجد ضیاء نے ملاقات کی ہے۔ اس موقع پر وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے احتساب مرزا شہزاد اکبر بھی موجود تھے۔

وزیراعظم آفس سے جاری بیان کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے ملاقات کے دوران اس عزم کا اعادہ کیا کہ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت کے ایجنڈے میں کرپشن، سائبر کرائم، اکنامک کرائم، امیگریشن سے متعلق جرائم، منی لانڈرنگ سمیت دیگر منظم جرائم کا خاتمہ اور بلا تفریق احتساب بنیادی نکتہ ہے۔

مولانا اسلام آباد فتح کرنے آئے تھے، نئے پنجاب میں فرق نظر آئیگا،اپوزیشن کی سیاست ختم، وزیراعظم

وزیراعظم کے آبائی حلقے میں پولیس گردی، شہریوں نے مجبور ہو کر کیا قدم اٹھایا؟

ڈی جی ایف آئی اے ڈاکٹر واجد ضیاءنے وزیراعظم عمران خان کو یقین دہانی کرائی کہ وہ عزم کے ساتھ ملک کے لئے بہتر خدمات سر انجام دیں گے۔

دوسری جانب وزیراعظم عمران خان نے معاون خصوصی برائے احتساب شہزاد اکبر کو مشیر برائے امور داخلہ بھی بنا دیا گیا،معاون خصوصی احتساب اورامورداخلہ شہزاد اکبرکا عہدہ وزیرمملکت کےمساوی ہوگا، اس حوالہ سے نوٹفکیشن بھی جاری کر دیا گیا ہے.

اب ڈومور ختم،کوئی طاقت پاکستان کو آگے بڑھنے سے نہیں روک سکتی، وزیراعظم عمران خان

کامیاب جوان پروگرام،20 روز میں کتنے لاکھ درخواستیں موصول ہوئیں؟ وزیراعظم کو بریفنگ

قبل ازیں وزیرِ اعظم عمران خان سے حال ہی میں ترقی پانے والے وفاقی سیکرٹریز نے ملاقات کی ۔ وزیرِ اعظم عمران خان نے ترقی پانے والے افسران کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ ان کی ترقی انکی کارکردگی اور خالصتاً میرٹ کو مدنظر رکھ کر کی گئی ہے۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ ترقی پانے والے افسران اپنی نئی ذمہ داریاں نہایت فرض شناسی اور ملک و قوم کی خدمت کے بھرپورجذبے کے تحت ادا کریں گے۔

افسران سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ پاکستان تاریخ کے اہم دوراہے پر کھڑا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک کی تعمیر و ترقی کے لئے جہاں سیاسی لیڈرشپ نے وژن دینا ہے وہاں بیوروکریسی نے اس وژن کو عملی جامہ پہنانا ہے۔ 60 کی دہائی میں گورننس کے لحاظ سے مثالی سمجھاجانے والا ہمارا ملک آج خطے میں دوسرے ممالک سے قدرے پیچھے رہ گیا ہے جس کی مختلف وجوہات ہیں۔

آرمی چیف کی مدت ملازمت، عدالتی فیصلہ کے بعد وزیراعظم کا انتہائی اہم بیان

ریاست مدینہ کی جانب ایک قدم اور،پناہ گاہ، احساس، دسترخوان کے بعد وزیراعظم لا رہے ہیں ایسا پروگرام کہ اپوزیشن بھی ہوئی حیران

وزیرِ اعظم نے ترقی پانے والے افسران کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ وہ اپنی ذمہ داریاں جہاد اور قومی فریضہ سمجھ کر ادا کریں۔ اللہ تعالیٰ نے پاکستان کو بے پناہ وسائل اور افرادی قوت سے نوازا ہے۔ گذشتہ پندرہ ماہ میں غیر ملکی سرمایہ کاروں نے معیشت کے ہر شعبے میں دلچسپی کا اظہار کیا ہے۔ موجودہ حکومت کی کوششوں کی وجہ سے آج ملک میں معاشی استحکام ہے اور ملکی وغیر ملکی سرمایہ کار اور کاروباری برادری ملکی معیشت اور پالیسیوں پر اعتماد کا اظہار کر رہے ہیں۔ اس استحکام کو مزید تقویت دینے کے لئے ضروری ہے کہ بیوروکریسی طرز حکومت اور عوام کی فلاح و بہبود کے ضمن میں اپنابھرپور کردار ادا کرے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.