وزیراعظم کے ظہرانے میں اتحادی جماعتوں کی عدم شرکت

‏باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے اتحادیوں کے اعزاز میں وزیراعظم ہاؤس میں ظہرانہ‏ دیا ہے

وزیراعظم کے ظہرانے میں بلوچستان عوامی پارٹی کےاراکین نے شرکت کی ہے،وزیراعظم کے ظہرانے میں ایم کیو ایم، جی ڈی اے کے وفد نے بھی شرکت کی ہے،ظہرانے میں وفاقی وزرا اور پی ٹی آئی کی اعلیٰ قیادت شریک ہے،وزیراعظم کےظہرانے میں اتحادی جماعتوں کے کئی ارکان پارلیمنٹ بھی شریک ہیں

وزیراعظم کے ظہرانے میں مسلم لیگ ق کے اراکین نےشرکت نہیں کی، ق لیگ سے چوھدری پرویز الہیٰ اور طارق بشیر چیمہ کو شرکت کی دعوت دی گئی تھی تا ہم وہ شریک نہیں ہوئے،ظہرانے میں بی این پی مینگل دعوت دیے جانے کے باوجود شریک نہ ہوئی ،ظہرانے کی تقریب میں اتحادیوں کے تحفظات بھی سنیں جائیں گے،

مشکوک خاتون دنیا کو بتا رہی ہے کہ پاکستانی ایک جنسی درندہ قوم ہیں.شاہ اویس نورانی

رحمان ملک ان ایکشن، الزامات پر سینتھیا کو 50 ارب ہرجانے کا دوسرا نوٹس بھجوا دیا

ق لیگ تو صرف سامنے تھی،حکومت ختم کرنے کی یقین دہانی کس نے کروائی تھی، مولانا فضل الرحمان

مولانا کے دھرنے کے وقت پرویزالہیٰ نے وزیراعظم کو کیا کہا تھا؟ چودھری شجاعت نے کیا اہم انکشاف

اتحادی جماعت کی علیحدگی،وزیراعظم نے منانے کا ٹاسک دے دیا

عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید بھی ظہرانےمیں شریک ہیں ،مسلم لیگ ق کے اراکین نےپارٹی کے تحفظات کے باعث ظہرانے میں شرکت نہ کی،وزیراعظم ظہرانےکے دوران اتحادیوں کو اہم قومی امور پر اعتماد میں لیں گے،اپوزیشن کے ریاست مخالف بیانات اور پی ڈی ایم کے جلسوں پربات ہوگی،

مولانا فضل الرحمان کی زیر صدارت پی ڈی ایم کا اہم اجلاس جاری،مریم سمیت کون کون شریک؟

کیپٹن ر صفدر کی درخواست ضمانت پر عدالت نے فیصلہ سنا دیا

مریم نواز کو اندر کون ڈالے گا؟. اہم سوال اٹھ گیا

پی ڈی ایم کا گوجرانوالہ میں جلسے پر مقدمہ درج

پی ڈی ایم جلسہ ،ایس او پیز کی خلاف ورزی پر مقدمہ، عدالت کا بڑا حکم

مریم نواز کی گرفتاری کی خبریں، ن لیگ اور پیپلز پارٹی نے تردید کر دی

مریم نواز ہوٹل سے اچانک ترجمان کے گھر کیوں روانہ ہوئیں؟

رات گئے اس طرح کی گرفتاری ….بلاول کا صفدر کی گرفتاری کے 11 گھنٹے بعد مریم سے رابطہ،کیا کہا؟

مریم نواز ایک بار پھر نیوز کانفرنس سے اٹھ کر چلی گئیں

واضح رہے کہ اپوزیشن جماعتوں نے پی ڈی ایم کے نام سے حکومت کے خلاف تحریک شروع کی ہے جس میں نواز شریف و دیگر رہنما اداروں پر تنقید کرتے ہوئے بھارتی بیانیہ سامنے لا رہے ہیں اور پاکستان کو عدم استحکام سے دو چار کرنا چاہتے ہیں، وزیراعظم نے اپوزیشن جماعتوں کو سخت پیٍغام دینے کا فیصلہ کیا ہے ۔ وزیراعظم پارٹی ترجمانوں اور وزراءکو پہلے ہی کہہ چکے ہیں کہ پی ڈی ایم کی سیاسی محاذ پر بھرپور مزاحمت کی جائے ۔ اب وزیراعظم عمران خان کی جانب سے اتحادیوں کو بھی اعتمادمیں لینے کا فیصلہ کیاگیا جس میں وزیراعظم اپنے اہم اتحادیوں کو بھی اس معاملے سے متعلق اعتماد میں لیں گے۔

بہت ہو گیا پی ڈی ایم کا کھیل تماشا، وزیراعظم نے بڑا فیصلہ کر لیا

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.