ن لیگ نے گلگت بلتستان میں دوبارہ الیکشن کا مطالبہ کر دیا

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق سابق وزیراعلیٰ گلگت بلتستان،ن لیگ کے رہنما حافظ حفیظ الرحمان نے کہا ہے کہ ہمارے ترقیاتی منصوبوں کوسیل کیا گیا، ہم نے جی بی کی اسمبلیاں توڑنے کا فیصلہ کیا،

حافظ حفیظ الرحمان کا کہنا تھا کہ مقتدرحلقوں نے یقین دہانی کرائی ہم نے اسمبلی نہیں توڑی،چیف الیکشن کمشنر کی تعیناتی میں طریقہ کار کی خلاف ورزی کی گئی،جی بی میں ہمارے توڑے گئے افراد کو پی ٹی آئی میں شامل کرایا گیا،ہائی کورٹ نے وزراکو جی بی سے نکالنے کا حکم دیا ،پی ٹی آئی کے وزرانےکورٹ کے فیصلے کو ردی کی ٹوکری میں پھینک دیا،

حافظ حفیظ الرحمان نے مطالبہ کیا کہ گلگت بلتستان میں از سر نو الیکشن کرایا جائے ،اسلام آباد سے اٹھا کر ایک شخص کو نگراں وزیراعلیٰ بنایا گیا،

مسلم لیگ ن کے رہنما احسن اقبال کا کہنا تھا کہ 2018 کے انتخابات میں دھاندلی کے ذریعے سلیکٹڈ حکمران مسلط کرنے کا تجربہ کیا گیا اور اس کا ری پلے گلگت الیکشن میں کیا گیا،عوام ووٹ کی عزت کا حق مانگ رہے ہیں،جس ملک میں ووٹ کی عزت نہیں کی جاتی اس کی سالمیت خطرے میں پڑ جاتی ہے،ہم نے ووٹ کی عزت کو پامال کرکے آدھا ملک کھو دیا۔

احسن اقبال کا کہنا تھا کہ گلگت بلتستان میں مسلم لیگ ن نے تاریخی ترقیاتی کام کیے لیکن گلگت کی عوام کو حق نہیں دیا گیا کہ وہ خدمت کرنے والی حکومت کو دوبارہ منتخب کریں،حافظ حفیظ الرحمان کے آخری دنوں میں مسلم لیگ ن کے کیسے ہاتھ پاؤں باندھے گئے،جی بی پاکستان کا حساس خطہ ہے ،یہ خطہ پاکستان کو چین سے ملاتا ہے اور سی پیک کے حوالے سے بھی یہ اہمیت رکھتا ہے،جی بی کی عوام کو ترقی خوشحالی دیں تاکہ وہاں کسی دشمن کو کوئی حرکت کرنے کا موقع نہ ملے،

احسن اقبال کا مزید کہنا تھا کہ جی بی میں جتنی خدمت مسلم لیگ ن نے کی اتنی کسی نے نہیں کی یہ ہمارے مخالف بھی ماننے کو تیار تھے لیکن جی بی میں سلیکٹڈ حکومت مسلط کی گئی،جی بی کی عوام نے دھاندلی کے باوجود پی ٹی آئی کو شکست دی ،آزاد امید واروں کو دباؤ دیکر شامل کروایا گیا ،جنہوں نے الیکشن میں دھاندلی کی انہیں وارننگ دینا چاہتا ہوں،کشمیر میں انتخابات میں ہر پولنگ سٹیشن پر کھڑے ہوں گے اور دھاندلی نہیں کرنے دیں گے، اگلے قومی الیکشن میں بھی ہر پولنگ سٹیشن پر ن لیگ کے شیر نگرانی کریں گے،

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.