fbpx

دعا زہرہ نہیں ملی بلکہ صرف نکاح نامہ ملا،پولیس

دعا زہرہ کا نکاح نامہ باغی ٹی وی نے حاصل کر لیا

دعا زہرہ نہیں ملی بلکہ صرف نکاح نامہ ملا،پولیس
لاہور پولیس کا کہنا ہے کہ دعا زہرہ کو ابھی تک بازیاب نہیں کروایا جا سکا،

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے لاہور پولیس کی جانب سے کہا گیا ہے کہ کراچی سے لاپتہ لڑکی دعا زہرہ کے ملنے کا معاملہ لاہور پولیس کو کراچی پولیس نے لڑکی کا نکاح نامہ فراہم کیا. دعا زہرہ کے پولیس کو ملنے کی خبروں میں صداقت نہیں ہے۔دعا زہرہ کی بازیابی کے بعد ہی اصل حقائق سامنے آئیں گے۔پولیس نکاح نامے پر ایڈریس سے لڑکی کو تلاش کر رہی ہے۔لاہور پولیس کراچی پولیس سے مسلسل رابطے میں ہے۔ٹیمیں تشکیل دے دیں گئیں،لڑکی کو جلد تلا ش کر لیا جائے گا۔

موصول ہونے والے نکاح نامے کے مطابق دعا زہرہ کاظمی کا نکاح بابو صابو شیر شاہ کالونی لاہور کے رہائشی 21 سالہ ظہیر احمد کے ساتھ انجام پایا, دلہن کی عمر نکاح نامے کے مطابق 18 سال ہے, 17 اپریل کو نکاح حافظ غلام مصطفی نے پڑھایا،نکاح خوان مزنگ لاہور کا رہنے والا ہے، دعا زہرہ کا نکاح نامہ باغی ٹی وی نے حاصل کر لیا ہے،

قبل ازیں کراچی کے علاقے گولڈن ٹاﺅن سے لاپتہ ہونے والی 14 سالہ نوجوان لڑکی دعا زہرہ کو لاہور سے ٹریس کر لیا گیا ہے جسے پولیس نے اپنی حفاظتی تحویل میں لے لیا ہے، وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے بھی تصدیق کی ہے اور کہا ہے کہ دعا زہرہ بازیاب ہوگئی ہے،

کراچی سے لاپتہ دعا زہرہ مل گئی ہے. دس روز ٹویٹر پر دعا کی تلاش کے لئے ٹرینڈ چلتا رہا، تا ہم اب انکشاف ہوا کہ دعا زہرہ جس کے لئے ساری قوم پریشان تھی انہوں نے لاہور میں آ کرشادی کر کے اپنی زندگی کے نئے سفر کا آغاز کر دیا ہے، دعا زہرہ کراچی کے علاقے الفلاح گولڈن ٹاؤن سے 16 اپریل کو لاپتہ ہوگئی تھی.دعا زہرہ نے لاہور میں آکر ظہیر نامی نوجوان سے نکاح کر لیا تھا پولیس کی جانب سے لڑکے کو بھی اپنی حفاظتی تحویل میں لے لیا گیا ہے دعا زہرہ کا ویڈیو بیان پولیس نے ریکارڈ کر لیاہے جو کہ جلد ہی شیئر کیا جائے گا ، دعا زہرا کے نکاح نامے کی فوٹو کاپی بھی مل گئی ہے .پولیس کا کہنا ہے کہ نکاح نامے کی تصدیق کے حوالے سے تفتیش کر رہے ہیں

دعا زہرہ کے والد نے بیان دیتے ہوئے کہا کہ پولیس نے ابھی تک رابطہ نہیں کیا ہے اور نہ ہی کسی قسم کی کوئی تفصیل بتائی گئی ہے پولیس کا کہنا ہے کہ مزید تفصیلات فی الحال جاری نہیں کی جا سکتیں ،گمشدگی کا مقدمہ ہے تفتیش میں مسائل آ سکتے ہیں

کراچی کے علاقے شاہ فیصل کالونی گولڈن ٹاؤن میں گھر کے باہر سے دعا زہرہ غائب ہوگئی تھی تا ہم پولیس حکام نے دعویٰ کیا تھا کہ دعا کو اغوا نہیں کیا گیا ہے بلکہ وہ اپنی مرضی سے گئی ہے پولیس کی تفتیشی رپورٹ اور بچی کے اہلخانہ کے بیانات میں تضادات سامنے آئے پولیس رپورٹ کے مطابق لاپتہ بچی کے والد نے بتایا کہ دعا ساتویں جماعت کی طالبہ ہے جبکہ سکول انتظامیہ کے مطابق بچی تیسری جماعت تک سکول آتی تھی، تیسری جماعت تک بچی کے سکول آنے کی تصدیق کلاس فیلوز نے بھی کی۔

تحقیقات میں پتہ چلا ہے کہ دعا تیسری جماعت سے سکول ہی نہیں گئی تفتیشی حکام نے دعویٰ کیا ہے کہ پولیس نے نجی سکول کے پرنسپل، ساتھی طالبات سے بھی معلومات حاصل کی ہیں جبکہ گھر میں لگے انٹرنیٹ ڈیوائس سے بھی اہم شواہد ملے ہیں پولیس کا دعویٰ ہے کہ کوٹ میرج اور پسند کی شادی سے متعلق سرچ ہسٹری ملی تھی۔

بیوی کی سفاکی، شوہر کو ہتھوڑے کے وار سے قتل کروا کر سر اور ہاتھ بدن سے الگ کر لئے

والد،والدہ،بہن، بھانجے،ساس کو قتل کرنیوالا سفاک ملزم گرفتار

تبادلہ کروانا چاہتے ہو تو بیوی کو ایک رات کیلئے بھیج دو،افسر کا ملازم کو حکم

معذور بچی کے ساتھ زبردستی گھناؤنا کام کرنیوالا ملزم گرفتار

20 سالہ لڑکی کو اغوا کر کے کیا گیا مسلسل دو روز گھناؤنا کام

پیار کرنا بن گیا جرم،جوڑے کے گلے میں جوتوں کا ہار ڈال کرلگوایا گیا چکر

سگی بیٹی کے ساتھ گھناؤنا کام کرنے والے سفاک باپ کو عدالت نے سنائی سزا

پوش علاقوں میں گھوم کر فیملیز کے ساتھ گھناؤنا کام کرنیوالا گروہ گرفتار