ورلڈ ہیڈر ایڈ

پولیس کی گواہی، سپریم کورٹ نے ایسے ریمارکس دیئے کی پولیس کی خوشی کی انتہا نہ رہی

سپریم کورٹ نے ایک کیس کی سماعت کے دوران ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ کوئی اورگواہ نہ ہوتوجرم ثابت کرنے کیلئےپولیس کی گواہی کافی ہے.

نفرت انگیزمواد پھیلانے کے مجرم کی بریت کی درخواست مسترد

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق سپریم کورٹ میں ایک کیس کی سماعت کے دوران عدالت نے پولیس کی گواہی کے حوالہ سے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ پولیس کی گواہی ناقابل قبول قرارنہیں دی جاسکتی،عدالتیں قانون کےمطابق پولیس گواہی پرانحصارکرسکتی ہیں، پولیس اہلکاربھی اتنے ہی اچھےگواہ ہیں جتنا کوئی اورہوسکتا ہے،

سپریم کورٹ میں بحریہ ٹاؤن کی جمع ہونے والی رقم، وفاقی حکومت نے بڑا مطالبہ کر دیا

سپریم کورٹ کا مزید کہنا تھا کہ پولیس اورعام گواہ کی شہادت کیلئے معیاریکساں ہے،یہ موقف درست نہیں کہ صرف پولیس کی گواہی پرانحصارنہیں کیا جا سکتا، کوئی اورگواہ نہ ہوتوجرم ثابت کرنے کیلئے پولیس کی گواہی کافی ہے.

کے پی کے میں شجرکاری پرسپریم کورٹ کے ریمارکس جان کر ہوں حیران

نفرت انگیز مواد پھیلانے کے کیس کی سماعت سپریم کورٹ میں ہوئی، عدالت نے مجرم کی بریت کی درخواست مسترد کر دی ، سپریم کورٹ نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ نفرت انگیزمواد صرف پھیلانا نہیں بلکہ پاس رکھنا بھی بڑاجرم ہے،سپریم کورٹ نے مجرم کی 5 سال قیداورایک لاکھ روپے جرمانےکی سزابرقراررکھی، مجرم کو 2015 میں اوکاڑہ پولیس نے گرفتار کیا تھا

نہ اسلام جھوٹ کی اجازت دیتا ہے اور نہ قانون، چیف جسٹس کے قتل کیس میں ریمارکس

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.