fbpx

پولیس نےتحقیقات شروع کردیں:بورس جانسن مشکل میں پھنس گئے

لندن:پولیس نےتحقیقات شروع کردیں:بورس جانسن مشکل میں پھنس گئے ،اطلاعات کے مطابق بورس جانسن اس وقت سخت مشکل میں ہیں،بورس جانسن کے پرائیویٹ سیکرٹری اس وقت پولیس کی گرفت میں‌ آنے والے اور بورس جانسن کے متعلق خاص خاص اہم ایشوز کے حوالے سے جوباتیں افشاں کرچکے تھے اب اسے پولیس کی تحقیقات کے خطرے کا سامنا ہے

اس حوالے سے یہ خبریں بھی گردش کررہی ہیں کہ بورس جانسن کے پرائیویٹ سیکرٹری نے پہلے لاک ڈاؤن کے دوران 100افراد کو ڈاؤننگ اسٹریٹ میں ‘BYOB’ میں مدعو کیا تھا

یاد رہے کہ پچھلے سال 20 مئی 2020 کوبورس جانسن کے حوالے سے پرائیویٹ سیکرٹری نے یہ خبربریک کی تھی کہ وزیراعظم بورس جانسن نے کورونا ایس او پیز کی خلاف ورزی کرتے ہوئے یہ اکٹھ کیا تھا

دوسری طرف یہ بھی بات سامنے آئی ہے کہ اس تقریب سے متعلق ای میل بورس جانسن کے لیے بدنامی اور بیڈ گورننس کا سبب بنی تھی ،ان خبروں کے بعد یہ بھی کہا جارہا تھا کہ بورس جانسن کے خلاف تحقیقات ہونی چاہیں اور پھرآج وہ دن بھی بورس جانسن نے دیکھ لیا جب لندن پولیس نے تحقیقات کا فیصلہ کیا ہے

یہ کہا جارہا ہے کہ یہ اس وقت کی بات ہے جب اس وقت صرف دو افراد کو باہر سماجی رابطے کی اجازت دی گئی تھی جبکہ انگلینڈ کے کوویڈ کی روک تھام کے تحت کم از کم دو میٹر کے فاصلے پر۔ ‘ضروری کام کے مقاصد’ کے لیے ایک چھوٹ تھی،

یہ بھی ایک پریشانی کی بات ہے کہ جب کل بورس جانسن اپنے حلقے میں انتخابی مہم کے سلسلے میں پہنچے تو لوگوں نے سوال کیا کہ جناب کیا ایس او پیز صرف ہمارے لیے ہی ہیں‌، لوگوں نےیہ بھی سوالات کئے کہ بورس جانسن کی اہلیہ کیری اور 30-40 عملے کے ساتھ اس اجتماع میں شریک ہوئے جنہوں نے مشروبات، کرسپس اور ساسیج رولز پر کھانا کھایا –

اب پولیس انہیں الزامات کی تحقیقات کرنے جارہی ہے اور یہ امکان ہے کہ بورس جانسن کو خفگی اٹھانا پڑسکتی ہے

دوسری طرف بورس جانسن کے وکلاء نے مشورہ دیا ہے کہ وزیر اعظم نے اس وقت قانون نہیں توڑا تھا ،کیونکہ یہ بورس جانسن نے کورونا سے بچاو کے حوالے سے ہی کیا تھا جو کہ ان کا استحقاق تھا

وزیراعظم کو اس وقت پریشانی کا سامنا کرنا پڑا جب ہاوس آف کامنز میں ایک فوری سوال کرنے کی اجازت دی گئی ہے – حالانکہ ایسا لگتا ہے کہ وزیر اعظم ذاتی طور پر جواب نہیں دیں گے۔

وزیر صحت ایڈورڈ آرگر نے آج صبح انٹرویو کے ایک دور میں کہا کہ وہ ان الزامات پر عوام کے ‘غصے’ کو سمجھتے ہیں، اور اس بات پر زور دیا کہ وہ ذاتی طور پر مئی 2020 میں کسی بھی مجلس میں موجود نہیں تھے البتہ زوم کے ذریعے لنک تھے جو کہ درست ہے

دوسری طرف سکاٹ لینڈ یارڈ نے تصدیق کی ہے کہ وہ وزیراعظم کی طرف سے دی گئی ضیافت کے پروگرام کی رپورٹس پر اب ‘کیبنٹ آفس سے رابطے میں ہیں’۔ دوسری طرف یہ بھی سُننے کو مل رہا ہے کہ سکاٹ لینڈ یارڈ یہ دیکھنے کے لیے انتظار کر رہی ہے کہ آیا مزید کارروائی کی ضرورت ہے یا نہیں

میٹ کے ترجمان نے کہا: ‘میٹرو پولیٹن پولیس سروس 20 مئی 2020 کو ڈاؤننگ اسٹریٹ میں ہیلتھ پروٹیکشن ریگولیشنز کی مبینہ خلاف ورزیوں سے متعلق وسیع پیمانے پر رپورٹنگ سے آگاہ ہے اور کیبنٹ آفس سے رابطے میں ہے۔’اور اگریہ ثابت ہوگیا کہ بورس جانسن نے غلط بیانی اور ایس او پیز کی خلاف ورزی کی ہے توبورس کا اپنے عہدے سے استعفی دینا پڑسکتا ہے

Facebook Notice for EU! You need to login to view and post FB Comments!