اب پتہ چلے گا کہ انصاف سب کے لیے ہے ؟ نواز شریف کے بعد عام قیدیوں نے بھی ریلیف مانگنا شروع کردیا

0
55

اسلام آباد : اب پتہ چلے گا کہ انصاف سب کے لیے ہے ؟ نواز شریف کے بعد عام قیدیوں نے بھی ریلیف مانگنا شروع کردیا، اطلاعات کےمطابق سابق وزیراعظم نواز شریف کو ریلیف ملنے کے بعد سزائےموت کے قیدی نے چیف جسٹس اسلام آباد ہائی کورٹ سے استدعا کی ہے کہ بینائی کامسئلہ ہے ، علاج کے لئے سہولت فراہم کی جائے۔

لیفٹیننٹ جنرل ندیم رضا چیئرمین جوائنٹ چیفس آف اسٹاف کمیٹی مقرر

تفصیلات کے مطابق سابق وزیراعظم نواز شریف کو ریلیف ملنے کے بعد عام قیدیوں نےبھی ریلیف مانگناشروع کردیا ، سزائےموت کے قیدی نے چیف جسٹس اسلام آباد ہائی کورٹ کو خط لکھ دیا ، قیدی خادم حسین کی جانب سےآنکھوں کےعلاج کیلئےخط لکھا گیا۔خط میں سزائے موت کے قیدی نے استدعا کی ہے کہ بینائی کامسئلہ ہےعلاج کے لئےسہولت فراہم کی جائے۔عدالت نے خط کودرخواست میں تبدیل کرتے ہوئے حکومت سے کل جواب طلب کرلیا ہے ، چیف جسٹس اسلام آباد ہائی کورٹ کل صبح9 بجے درخواست کی سماعت کریں گے۔

نیب کارکردگی ،ماضی کی حکومتوں اورموجودہ حکومت کا فرق،کیا کھویا کیا پایا 

یاد رہے لاہور ہائی کورٹ نے سابق وزیراعظم نوازشریف کو بیرون ملک جانے کے لیے حکومت کی جانب سے عائد کردہ انڈیمنٹی بانڈز کی شرط کو مسترد کرتے ہوئے غیر مشروط طور پر بیرون ملک جانے کی اجازت دی تھی ، فیصلے میں کہا گیا تھا کہ نوازشریف کو علاج کےغرض سے 4 ہفتوں کے لیے باہر جانے کی اجازت دی جاتی ہے اور اس مدت میں توسیع بھی ممکن ہے۔

بھارتی مشرقی ریاستوں میں 2015-2017 کے دوران قریب 28000افراد لاپتہ ہوئے:

اس سے قبل لاہور ہائی کورٹ میں جیلوں میں 10 ہزار بیمار قیدیوں نے طبی بنیاد پر رہائی کی درخواست دائر کی تھی ، درخواست میں استدعا کی گئی تھی کہ نوازشریف کی طرح بیمار قیدیوں کو طبی بنیاد پر ضمانت دی جائے۔بعد ازاں لاہورہائی کورٹ نے درخواست چیف سیکریٹری پنجاب کو بھجوا دی تھی اورچیف سیکریٹری پنجاب کو درخواست پر فیصلے کی ہدایت کی تھی، عدالت میں دائر کی گئی درخواست میں کہا گیا تھا کہ جیلوں میں 10 ہزارسے زائد قیدی مختلف بیماریوں میں مبتلا ہیں، جیلوں میں قیدیوں کو علاج کی مناسب سہولتیں میسر نہیں ہیں۔

Leave a reply