ورلڈ ہیڈر ایڈ

پوری قوم کی ایک آواز قومی زبان میں یکساں نصاب!! فاطمہ قمر

سابق حکومت کی طرح سے نہیں کہ یکساں نصاب کا نعرہ لگاتے ‘ لگاتے ائین پاکستان کو پامال کرتے ہوئے اور قائد اعظم کے فرمان کی نافرمانی کرتے ہوئے تمام سرکاری تعلیمی اداروں کو انگریزی میڈیم کر کے وہ ہولناک تباہیاں مچائیں کہ جس کا تصور بھی محال ہے۔۔بجائے اس کے ‘ کہ نجی تعلیمی اداروں پر لاگو کیا جاتا کہ وہ ائین پاکستان کی روشنی میں اپنے تمام تعلیمی اداروں کو اررو میڈیم کر کے قومی دھارے میں شامل ہوں۔ الٹا ان لوٹ مار اداروں کے مفاد میں پاکستان کے سرکاری تعلیمی اداروں کا بیڑہ غرق کردیا گیا۔ قوم آپ کو متنبہ کرتی ہے کہ عدالت عظمیٰ کے فیصلے کے بعد ” یکساں نصاب ” کو انگریزی میں مسلط کرکے اب یہ دھول قوم کی آنکھوں میں نہ جھونکی جائیں! غیر ملکی زبان میں تعلیم دینا نہ صرف فطرت کے قوانین سے بغاوت ہے بلکہ یہ بنیادی انسانی حقوق کی بھی نفی ہے۔ دنیا کا اصول ہے کہ جس ملک کی جو رابطے کی زبان ہے’ زرائع ابلاغ کی زبان ہے وہی تعلیم کی بھی زبان ہے۔کسی بھی مہذب دنیا میں یہ تصور ہی محال ہے کہ ملک کسی اور قوم کا ہو اور زبان کسی اور قوم کی۔ فرانس’ ترکی’ برطانیہ’ امریکہ’ چین ‘ جاپان’ کوریا ‘ اٹلی وغیرہ کی مثال ہمارے سامنےہے۔ یکساں نصاب تعلیم کے حوالے سے پاکستان قومی زبان تحریک کے بانی ‘ سینئر سائنسدان ماہر تعلیم پروفیسر اشتیاق احمد نے سے ایک بہت سستا’ قابل عمل ‘ جلد نتیجہ خیز خاکہ تشکیل دیا ہے۔ جو پاکستان سٹیزن کونسل کے اس سیمینار میں پیش کیا گیا جس کے اپ مہمان خصوصی تھے۔ جس میں اپ نے عین وقت پر شرکت سے معذرت کرلی تھی۔ اس محفل کے شرکاء پاکستان کے انتہائی باشعور ‘ اہل الرائے پاکستانی تھے۔جنہوں نے اس نصابی تعلیم کے خاکے کی منظوری بھاری اکثریت کے ساتھ کی۔ یہ نصابی خاکہ پرائمری تعلیم سے لے کر پی ایچ ڈی تک ہے۔ اس خاکے میں پرائمری تعلیم صرف اردو اور مادری میں زبان میں کی گئ ہے اور انگریزی کو ثانوی سطح پر ایک اختیاری مضمون کی حیثیت دی گئ ہے۔ ہم سفارش کرتے ہیں کہ کوئی بھی نصابی خاکہ تشکیل دینےسے پہلے پروفیسر اشتیاق احمد کے پیش کردہ اس یکساں نصاب کے خاکے کو ہرحال میں مد نظر رکھا جائے۔
یہ حکومت تبدیلی کے نام پر وجود میں ائی ہے لہذا یہ عدالت عظمیٰ کے حکم کی روشنی میں تمام تعلیمی اداروں میں یکساں نصاب قومی زبان میں نافذ کر کے قوم کی امنگوں کو پورا کرے!!

فاطمہ قمر پاکستان قومی زبان تحریک

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.