پی پی جیالوں کی پی ٹی آئی خواتین رہنماؤں کے ساتھ ملیر انتخابات میں بد سلوکی

پی پی جیالوں کی پی ٹی آئی خواتین رہنماؤں کے ساتھ ملیر انتخابات میں بد سلوکی

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق پی پی جیالوں کی پی ٹی آئی خواتین رہنماؤں کے ساتھ ملیر انتخابات میں بد سلوکی کی گئی ہے

جیالوں کی خواتین رہنماؤں کی گاڑی کے سامنے شدید نعرے اور ہلڑ بازی کی،گاڑی میں پی ٹی آئی وومن ونگ جنرل سیکرٹری ارم بٹ، لیلہ پروین، فوزیہ صدیقی موجود ہیں پی ٹی آئی کی خواتین کا کہنا ہے کہ پیپلز پارٹی نے اپنے غنڈے بھیجے،پی پی جیلوں نے دھکا دیا،جھنڈے اور ہاتھ کھینچا،پی پی نے پورے سندھ میں اپنے غنڈے چھوڑے ہوئے ہیں،

پی ٹی آئی خواتین رہنماؤن کا کہنا ہے کہ پی پی نے انتخابات میں اپنی شکست قبول کرلی ہے،ڈی جی رینجرز پی پی جیالوں کی غنڈہ گردی کا نوٹس لیں،

قبل ازیں ریجنل الیکشن کمشنرکراچی سید ندیم حیدر نے جوڈیشل مجسٹریٹ کا اختیاراستعمال کرتے ہوئے سندھ اسمبلی کے حلقہ PS88 کے قانون نافذ کرنے والےا داروں کوسندھ اسمبلی میں قائد حزب اختلاف حلیم عادل شیخ کوحلقہ بدرکرنے کا حکم دیا۔ ملیر پولیس کےڈیوٹی افسرسلطان محمود نے حراست میں لیکرحلقہ بدر کردیا۔

الیکشن کمیشن کی جانب سے پولیس کو حکم جاری کیا گیا حلیم عادل شیخ کو فوری حلقہ 88 سے باہر نکال دیا جائے کیونکہ وہ مسلح محافظوں کے ہمراہ ریلی کی صورت میں پولنگ اسٹیشنز کا دورہ کررہے ہیں،جس سے ووٹرز کو پرامن ماحول میں حق رائے دہی استعمال کرنے میں دشواری پیش آرہی ہے،ساتھ ہی تمام سیاسی جماعتوں کے پارلیمنٹرینز پر بھی حلقہ میں داخلے پر پابندی عائد کردی گئی

پولنگ اسٹیشن نمبر 104 میمن گوٹھ پر پیپلزپارٹی کا پولنگ ایجنٹ سرکاری ملازم نکلا۔ پی ٹی آئی امیدوار جان شیر جونیجو کی تلخ کلامی ہوئی اور پولنگ عارضی طور پر روک دی گئی۔

بھٹائی آباد میں پی ٹی آئی اور ٹی ایل پی کارکنوں نے پی پی کیخلاف احتجاج کیا۔ ایس ایس پی ملیر عرفان بہادر موقع پر پہنچ گئے۔ مظاہرین کو منتشر کردیا۔ پولنگ اسٹیشن نمبر 39 پر ووٹر کا پہلے سے ووٹ کاسٹ ہونے پرپی ٹی آئی اور پی پی پی کارکنان نے شورشرابہ کیا۔ پیپلزپارٹی رہنماوں شیری رحمان اور سعیدغنی نے اسلحہ کی نمائش کی مذمت کی۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.