وزیر اعظم جنرل اسمبلی کے پچھترنویں اجلاس میں کشمیر کی صورتحال دنیا بھر کے سامنے رکھیں گے۔ وزیرخارجہ

وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی کی زیرِ صدارت خصوصی کمیٹی برائے کشمیر کا چھٹا اجلاس وزارتِ خارجہ میں منعقد ہوا۔ اجلاس میں مقبوضہ جموں و کشمیر میں جاری انسانی انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں اور لائن آف کنٹرول (ایل او سی) پر بھارتی اشتعال انگیزی سمیت مختلف امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔اجلاس میں وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے قومی سلامتی معید یوسف، پارلیمانی سیکرٹری برائے قانون بیرسٹر ملیکہ بخاری ، سیکرٹری قانون راجہ نعیم اکبر ، سمیت سول و عسکری حکام نے شرکت کی۔ اس موقعہ پر وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا کہ بین الاقوامی قوانین کو پس پشت ڈالتے ہوئے بھارت کی طرف سے مقبوضہ جموں و کشمیر میں انسانی حقوق کی مسلسل پایمالیوں اور لائن آف کنٹرول پر بلا اشتعال فائرنگ انتہائی تشویشناک ہے۔ ہم، بی جے پی حکومت کی ہندوتوا پالیسیوں اور بھارت کے توسیع پسندانہ عزائم سے پوری دنیا کو باخبر رکھے ہوئے ہیں۔ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا کہ بھارت اپنے جارحانہ عزائم کے سبب پورے خطے کے امن و امان کو داؤ پر لگا رہا ہے۔ بھارت کے انسانی حقوق کی پایمالیوں سے متعلقہ جرائم کی فہرست بہت طویل ہوتی جارہی ہے۔ نہتے کشمیریوں کو بھارتی استبداد سے نجات دلانے کیلئے عالمی برادری کو آگے آنا ہوگا۔ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان اقوام متحدہ جنرل اسمبلی کے پچھترنویں(75th) اجلاس کے موقع پر اپنے خطاب میں کشمیر کی صورتحال دنیا بھر کے سامنے رکھیں گے اور عالمی برادری کی توجہ بھارتی مظالم کی طرف مبذول کروائیں گے۔ پاکستان، مسئلہ کشمیر کو ہر فورم پر اٹھاتا رہے گا جب تک کشمیریوں کو اقوام متحدہ سیکورٹی کونسل کی قراردادوں کی روشنی میں ان کا جائز حق، حق خود ارادیت انہیں مل نہیں جاتا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.