fbpx

سندھ میں 2013 سے این ٹی ایس ٹیسٹ پاس امیدواروں کو ملازمت نہ ملنے پر احتجاجی مظاہرے

دڑو ،کندھ کوٹ، سجاول ،ٹھٹھہ باغی ٹی وی (نمائندگان )سندھ میں 2013 سے این ٹی ایس ٹیسٹ پاس امیدواروں کو ملازمت نہ ملنے پر احتجاجی مظاہرے –
تفصیل کے مطابق دڑوسے امتیاز آکاش میمن نے رپورٹ دی ہے کہ 2013 میں این ٹی ایس ٹیسٹ پاس کرنے والے امیدواروں نے آفر آرڈرز جاری نہ ہونے کے خلاف پنچاری پل پر احتجاجی دھرنا دیا۔این ٹی ایس پاس امیدواروں ظہیر احمد بھٹی، شفیع پلیجو، سید سلیم شاہ، ممتاز سومرو، منور بھٹو اور دیگر نے دڑو میں پنچاری پل چوک پر احتجاجی مظاہرہ کیا اور نعرے بازی کی۔امیدواروں نے وزیر تعلیم سندھ اور سیکریٹری تعلیم سے مطالبہ کیا کہ تمام این ٹی ایس پاس اساتذہ کو فوری طور پر آفر آرڈر جاری کئے جائے، اور پیدا ہونے والی بے چینی کو ختم کیا جائے بصورت دیگر احتجاج کا دائرہ بڑھایا جائے گا۔
کندھ کوٹ سے مختیار اعوان کی رپورٹ کے مطابق مظاہرین نے ہاتھوں میں پلے کارڈز اٹھا کر محکمہ تعلیم کے سیکریٹری کی ناانصافیوں کے خلاف زوردار نعرے بازی کی اس موقع پر ضلع کشمور کے چیف آرگنائزر ممتاز علی شیخ ۔ محمد کہوسو۔ امداد کے باجکانی۔ نبی بخش گولو۔میر علی رضا سندرانی۔ اور دیگر نے بات کرتے ہوئے کہا کہ 2013 میں ہم نے NTS جیسے معروف ادارے سے اساتذہ کی بھرتی کا ٹیسٹ پاس کیا اور 60 سے 97 پلس تک اسکور لیا لیکن 9 سال گزرنے کے باوجود ہمیں آفر آرڈر نہیں مل سکا، جب کہ ہم معزز عدالتوں تک پہنچے ہیں جہاں سے ہمارے حقوق کے حوالے سے ہمارے فیصلے ہوئے، ہیں سندھ حکومت اور محکمہ تعلیم عدالتی فیصلوں کو تسلیم نہیں کر رہی، جس کے بعد 14 جون کو سردار شاہ سے بات ہوئی، نوٹیفکیشن جاری ہوئے اور کمیٹی مقرر کی گئیں، سردار شاہ اپنے وعدے پر قائم نہیں رہے، اس دوران کراچی میں پرامن احتجاجی مظاہرے، میں امیدوارون پر تشدد اور جبر و تذلیل کرکے گرفتار کیا گیا، خواتین کی عزت کا خیال تک نہیں کیا گیا، اساتذہ کو مختلف تھانوں میں بند کردیا گیا، ہم چور اور ڈاکو نہیں بلکہ پاکستان کے پڑھے لکھے اور پرامن شہری ہیں۔ مظاہرین نے پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری، میڈم فریال تالپور، وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ، صوبائی وزیر تعلیم سردار شاہ سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں محکمہ تعلیم میں اساتذہ کے آفر آرڈر دے کر بے چینی ختم کی جائے بصورت دیگر ہم مرتے دم تک اپنے حقوق کے لیے مسلسل جنگ جاری رہیں گے۔
سجاول سے نامہ نگار یاسر علی پٹھان کی رپورٹ کے مطابق سجاول میں این ٹی ایس 2013 پاس کرنے والے امیدواروں نے آفر آرڈر نہ ملنے کے خلاف پلے کارڈز لے کر احتجاج کیا، راجیش، پردیپ، مول چند، جیکی کمار، گلزار بدن اور دیگر کی قیادت میں سورج سجاولی پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔ حکومت سندھ تعلیم دشمن پالیسیاں بنا کر تعلیم کا جہاز ڈبو رہی ہے جبکہ ہم معزز عدالتوں میں پہنچ چکے ہیں جہاں سے ہمارے حقوق کے حوالے سے فیصلے ہو چکے ہیں حکومت عدالتی فیصلوں کو تسلیم نہیں کر رہی۔ ہم سے کاغذات مانگے اور نوکریاں دینے کا وعدہ کیا لیکن اس نے اپنا وعدہ پورا نہیں کیا۔ مسلسل جدوجہد میں کراچی میں پرامن احتجاجی مظاہروں کے دوران ہمیں تشدد، جبر اور تذلیل سے گرفتار کیا گیا، خواتین کی عزت کا خیال تک نہیں کیا گیا، یہ کیا گیا ہے، ہم چور ڈاکو نہیں ہیں بلکہ ہم پڑھے لکھے، باشعور ہیں۔ اور پاکستان کے پرامن شہری، ہم تعلیم سے محبت کرتے ہیں، ہم ملنسار لوگ ہیں، ہم تعلیم حاصل کرنا چاہتے ہیں، ہم معاشرے اور معاشرے کے بہترین استاد ثابت ہوں گے، پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے۔میڈم فریال تالپر، وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ۔ مراد علی شاہ، صوبائی وزیر تعلیم سید سردار شاہ سے پرزور گزارش ہے کہ محکمہ تعلیم میں بے چینی ختم کرنے کے لیے ہمیں آفر آرڈر دیں بصورت دیگر جدوجہد مرتے دم تک جاری رہے گی۔
ٹھٹھہ نامہ نگار راجہ قریشی کی رپورٹ کے مطابق 2013 میں این ٹی ایس ٹیسٹ پاس کرنے والے نوجوان نعمان جوکھیو،غلام سرور بروہی، محمد اسماعیل میمن ،نواز جاکرو، واجد علی جوکھیو، اصغر شاہ اور بہت سے امیدواروں نے ٹھٹھہ میں احتجاج کرتے ہوے کہا ہم نے 2013میں این ٹی ایس جیسے بہترین ادارے سے اساتذہ کی بھرتی کے لۓ ٹیسٹ پاس کر کے، 60 سے 97 فیصد مارکس لیں لیکن 9 سال گزرنے کے باوجود ہمیں آفر آرڈر نہ مل سکے عدالت کے فیصلے کے باوجود ہمیں آفر آرڈر نہیں ملے ، انہوں نے کہا صوبائی وزیر تعلیم سردار شاہ سے 14جون کو باتیں کر کے نوٹیفکیشن جاری کرنے کیلئے کمیٹی مقرر کی گئی ، لیکن انہوں نے اپنے وعدے پورے نہ کئے،مظاہرین نے کہا کہ ہم پڑھے لکھے نوجوان تعلیم سے پیار کرتے ہیں پر امن احتجاج کرنے پر ہم پر لاٹھیاں برسائی جاتی ہیں، انہوں نےپی پی پی کے چیئرمین بلاول بہٹو زرداری .میڈم فریال ٹالپور، اور سندھ کے وزیر اعلیٰ سید مراد علی شاہ اورصوبائی وزیر تعلیم سردار شاہ سے مطالبہ کیا ہے کہ انہیں جلد ازجلد آفرلیٹر دیکر بے چینی ختم کی جاۓ ، دوسری صورت میں ہم مرگ بھوک ہرتال کریں گے.