تحریک انصاف کو بلے کا نشان واپس مل گیا

الیکشن کمیشن کے ڈی جی لا نے اپیل واپس لینے کی مخالفت کردی
0
25
pakistan

الیکشن کمیشن کے 21 اکتوبر 2022 کے فیصلے کیخلاف اپیل واپس لینے کی چیئرمین پی ٹی آئی کی درخواست پر سماعت ہوئی،

اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس عامر فاروق نے درخواست پر سماعت کی،الیکشن کمیشن کے ڈی جی لا نے اپیل واپس لینے کی مخالفت کردی،ڈی جی لا نے دوران سماعت عدالت میں کہا کہ توشہ خانہ سے متعلق تمام معاملہ اسلام آباد کی حدود میں ہوا، چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ عامر فاروق نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ اگر آپ کوئی تحریری دلائل دینا چاہیں تو دے دیں،چھوٹا سا معاملہ ہے، بحث کریں اور معاملہ ختم کریں،ہم اس کو فیصلے کیلئے رکھ دیتے ہیں، آپ نے جو تحریری طورپردینا ہے وہ دے دیں،جو پٹیشن آتی ہے وہ واپس بھی ہو سکتی ہے،عدالت نے چیئرمین پی ٹی آئی کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کرلیا

دوسری جانب الیکشن کمیشن نے پی ٹی آئی انٹراپارٹی انتخابات کیس کا فیصلہ محفوظ کرلیا تھا جو اب سنا دیا گیا ہے ،الیکشن کمیشن میں سماعت کے بعد تحریک انصاف کو بلے کا نشان واپس مل گیا ہے ، بیرسٹر گوہر علی خان کا کہنا ہے کہ کسی بھی وقت تفصیلی فیصلہ جاری ہو جائے گا

الیکشن کمیشن میں تحریک انصاف انٹراپارٹی انتخابات کیس کی سماعت ہوئی،نثار درانی کی سربراہی میں چاررکنی کمیشن نے سماعت کی، دوران سماعت ممبر نثار درانی نے کہا کہ پی ٹی آئی وکیل آج بھی دلائل کے لئے پیش نہیں ہوئے،جونیئر وکیل کو دلائل کے لئے وقت دینے کی استدعا مسترد کر دی گئی

واضح رہے کہ 30 اگست کو ہونے والی سماعت کے دوران الیکشن کمیشن نے انٹرا پارٹی انتخابات کیس میں پی ٹی آئی کو دلائل کے لئے دو ہفتے کی مہلت دی تھی ،مبر نثا ردرانی نے ریمارکس دیے تھے کہ اس کیس کو بہت زیادہ نہیں لٹکا سکتے الیکشن کمیشن آئندہ عام انتخابات کے لئے زیادہ تر سیاسی جماعتوں کو انتخابی نشان الاٹ کرچکا ہے

آپ یہ کہہ رہے ہیں کہ روزانہ کی بنیاد پر جج جو کیس سن رہے ہیں وہ جانبداری ہے ؟

آج پاکستان کی تاریخ کا اہم ترین دن ہے،

عمران خان کی گرفتاری کو اعلیٰ عدالت میں چیلنج کرنے کا اعلان 

عمران خان کی گرفتاری کیسے ہوئی؟ 

چئیرمین پی ٹی آئی کا صادق اور امین ہونے کا سرٹیفیکیٹ جعلی ثابت ہوگیا

پیپلز پارٹی کسی کی گرفتاری پر جشن نہیں مناتی

Leave a reply