fbpx

پی ٹی آئی فارن فنڈنگ کیس کی سماعت 7 جون تک ملتوی

الیکشن کمیشن میں پی ٹی آئی فارن فنڈنگ کیس کی سماعت 7 جون تک ملتوی کر دی گئی

الیکشن کمیشن نے پی ٹی آئی کے فنانشل ایکسپرٹ کو بریفنگ 5 روز میں مکمل کرنے کی ہدایت کر دی،چیف الیکشن کمشنر نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ جو سوالات ہوں گے ان کی تفصیلات مانگ لیں گے،الزام لگانا آسان ثابت کرنا مشکل ہوتا ہے،انور منصور نے ہمیں اکاونٹس کے معاملات اچھے انداز میں سمجھائے، الیکشن کمیشن نے پی ٹی آئی وکیل انور منصور کو دو دن میں دلائل مکمل کرنے کی ہدایت کر دی،

گزشتہ سماعت پر چیف الیکشن کمشنر نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ کچھ اکاونٹس پی ٹی آئی کے علم میں نہیں تھے جو انہوں نے تسلیم کیا، فنڈنگ میں کچھ بد نظمی اور بد انتظامی کو بھی پی ٹی آئی کی جانب سے تسلیم کیا گیا، اسکروٹنی کمیٹی رپورٹ اور پی ٹی آئی کے نقطہ نظر کا موازنہ کر رہے ہیں،نجم شاہ نے کہا کہ پی ٹی آئی نے 2012-13 میں 1 ارب 5 کروڑ روپے فنڈنگ وصول کی،اسکروٹنی کمیٹی کی غلط کیلکولیشن کے باعث 2012-13 میں 14 کروڑ 64 لاکھ روپے زائد شامل کیے ،اسکروٹنی کمیٹی کے پاس اسٹیٹ بینک سے ریکارڈ مانگنے کا اختیار نہیں تھا، اسکروٹنی کمیٹی پی ٹی آئی آڈٹ ریکارڈ کا ا سٹیٹ بینک رپورٹ سے موازنہ کر رہی تھی، ممبر نثار درانی نے کہا کہ کیا آپ کہنا چاہتے ہیں کہ اسکروٹنی کمیٹی کا ا سٹیٹ بینک کو لکھنے کا اختیار نہیں تھا؟ وکیل انور منصور نے کہا کہ اسکروٹنی کمیٹی نے اختیار استعمال کرتے ہوئے ا سٹیٹ بینک کو خط لکھا، اسٹیٹ بینک نے کئی ایسے بینک اکا ونٹس ریکارڈ میں شامل کیے جن کا پی ٹی آئی کو پتہ نہیں تھا،انفرادی طور پر کھلوائے اکاونٹس کا پی ٹی آئی سینٹرل فنانس ونگ کو معلوم نہیں تھا،پی ٹی آئی وکیل نے کہا کہ انفرادی اکاونٹس میں جو رقوم اکٹھی کی گئی وہ پی ٹی آئی آڈٹ میں شامل نہیں کی گئیں، آڈٹ رپورٹ میں پی ٹی آئی سینٹرل فنانس ونگ کے اکاونٹس کی تفصیلات ہی شامل تھیں

ممنوعہ فارن فنڈنگ کیس نومبر 2014 سے الیکشن کمیشن میں زیر سماعت ہے، اسلام آباد ہائیکورٹ نے فیصلہ دیا تھا کہ ایک ماہ میں فارن فنڈنگ کیس کا فیصلہ سنایا جائے تا ہم پی ٹی آئی دوبارہ عدالت پہنچی گئی اور اس فیصلے کو چیلنج کر دیا جس پر عدالت نے اسلام آباد ہائیکورٹ کے فیصلے کو معطل کر دیا، اور پی ٹی آئی کو اسلام آباد ہائیکورٹ سے ریلیف ملا

اداروں کیخلاف ہرزہ سرائی کے پیچھے کرپشن اور فارن فنڈنگ کیس کا خوف ہے،آصف زرداری

صدر مملکت نے وزیراعظم کو خط کا "جواب” دے دیا

فارن فنڈنگ کیس،باہر سے پیسہ آیا ہے لیکن وہ ممنوعہ ذرائع سے نہیں آیا،پی ٹی آئی وکیل

فارن فنڈنگ کیس کا فیصلہ 30 روزمیں کرنے کا حکم اسلام آباد ہائیکورٹ میں چیلنج

فارن فنڈنگ کیس، فیصلہ 30 روز میں کرنے کے فیصلے کیخلاف اپیل سماعت کیلئے مقرر

فارن فنڈنگ کیس میں بھی عمران خان کو اب سازش نظر آ گئی، اکبر ایس بابر

عمران خان اگلے سال الیکشن کا انتظار کریں،وفاقی وزیر اطلاعات

فارن فنڈنگ کیس،اسکروٹنی کمیٹی رپورٹ میں معلومات قابل تصدیق نہیں ،وکیل