fbpx

پی ٹی آئی نے جس پر دھمکی کا الزام لگایا تھا، اسی کی طرف دوستی کا ہاتھ بڑھا دیا؟

ایسا لگتا ہے کہ پی ٹی آئی کے چیئرمین عمران خان کی امریکہ مخالف اور بائیڈن انتظامیہ مخالف بیان بازی ان کی اپنی پارٹی کی پالیسیوں اور بیانات سے ہر گزرتے دن کے ساتھ ختم ہوتی جارہی ہے۔

باغی ٹی وی : تازہ ترین پیش رفت میں، اطلاعات ہیں کہ پی ٹی آئی امریکہ کے ساتھ تعلقات بحال کرنا چاہتی ہے ذرائع کا کہنا ہے کہ پی ٹی آئی نے جد پر دھمکی دینے کا الزام لگایا تھا اسی کی طرف دوستی کا ہاتھ بڑھا دیا ہے پی ٹی آئی نے مبینہ طور پر ڈونلڈ لو سے کہا ہے کہ چلو ماضی بھلائیں اور آگے بڑھیں-

امریکہ سے پاکستان کیلئےدرآمدات2.4ارب ڈالر رہیں:سردارمسعود خان

چلو آگے بڑھیں کا پیغام مبینہ طور پر 2019 سے پی ٹئ آئی کے سیکرٹری اوورسیز چیپیٹر ڈاکتر عبداللہ یات کی طرف سے ڈونلڈ لو کو بھیجا گیا عبداللہ یار نے جنوبی اور وسطی ایشیا کے لئے نائب امریکی وزیر خارجہ ڈونلڈ لو سے رابطہ کیا ہے اور انہیں ماضی بھلا کر آگے بڑھنے کی پیشکش کی ہے-

ڈونلڈ لو وہی امریکی نائب وزیر خارجہ ہیں جن پر عمران خان پاکستان کو دھمکی دینے کا الزام لگاتے رہے ہیں عمران خان پہلے ڈھکے چھپے الفاظ میں یہ بات کرتے تھے پھر انہوں نے ببانگ دہل ڈونلڈ لو کا نام لیا عمران خان نے کہا کہ ڈونلڈ لو نے ان کی پی ٹی آئی حکومت کے خلاف سازش کی ہے-

عمران خان نے کہا تھا کہ ڈونلڈ لو نے اس وقت کے پاکستانی سفیر اسد مجید کوبلا کہا کہ اگر پی ٹی آئی حکومت کے خلاف عدم اعتماد نہ ہوا تو پاکستان کو نتائج کا سامنا کرنا پڑے گا-

پاکستان تحریک انصاف کے رہنما ڈاکٹر عبداللہ ریاض فروری 2019 سے آفس آف انٹرنیشنل چیپٹرز (OIC) کے سیکرٹری کے طور پر کام کر رہے ہیں رپورٹس میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ وہ پی ٹی آئی اور امریکی انتظامیہ کے درمیان تعلقات بحال کرنے کے لیے فعال طور پر لابنگ کر رہے ہیں۔

پی ٹی آئی کے اس وقت کے سیکرٹری جنرل ارشد داد نے چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کی منظوری سے ڈاکٹر عبداللہ ریار کی پی ٹی آئی او آئی سی کے سیکرٹری کے طور پر تقرری کا نوٹیفکیشن جاری کیا تھا۔

کشمیر پریمیئر لیگ سیزن ٹو کا این او سی جاری

نوٹیفکیشن میں کہا گیا ہے کہ عبداللہ ریار کو فوری طور پر انٹرنیشنل چیپٹرز (OIC) کے سیکرٹری آفس کے طور پر چیئرمین کی منظوری سے تعینات کیا گیا ہےعبداللہ ریار نے چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان اور سیکرٹری جنرل ارشد داد کا انہیں اہم ذمہ داری سونپنے پر شکریہ ادا کیا۔

پی ٹی آئی او آئی سی کے سیکرٹری نے کہا کہ وہ عمران خان کے ویژن کی روشنی میں دنیا بھر میں کارکنوں کو منظم اور متحرک کریں گے۔

واضح رہے کہ اس سے قبل پی ٹی آئی نے الزام لگایا تھا کہ ایک سازش کے تحت انہیں اقتدار سے ہٹایا گیا جب کہ ایک اعلیٰ امریکی سفارت کار ڈونلڈ لو نے تحریک عدم اعتماد کے تناظر میں عمران خان کی حکومت کو دھمکی دینے کے لیے غیر سفارتی زبان استعمال کی تھی۔

پی ٹی آئی کے چیئرمین اور سابق وزیر اعظم عمران خان نے اپنی تقاریر میں بارہا کہا تھا کہ "جب میں نے یہ سائفر دیکھا (مبینہ طور پر اس وقت کے پاکستانی سفیر اسد مجید خان کو امریکی معاون وزیر خارجہ ڈونلڈ لو نے دیا تھا) تو میں نے اسے تین بار پڑھا۔

بتایا گیا کہ روس کے دورے کا فیصلہ عمران خان کا تھا۔ ہمارے سفارت کار نے ہمیں قائل کرنے کی کوشش کی کہ یہ ایک اجتماعی فیصلہ تھا لیکن امریکی نمائندے نے اصرار کیا کہ ایسا نہیں ہے۔

جارج بُش کی کامیابی پر دو رکعت نفل نماز پڑھنے والا نیازی امریکا دشمنی کا بھاشن…