fbpx

پنجاب اسمبلی ہنگامہ آرائی کیس،راجہ بشارت اور چوہدری ظہیرالدین نےعبوری ضمانت کرا لی

پنجاب اسمبلی ہنگامہ آرائی کیس میں صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت کے خلاف بھی پنجاب حکومت نے کیس بنا دیا، سابق وزیر قانون پر جس دن کا کیس بنایا گیا ہے وہ ُاس دن وزیر قانون تھے،کیونکہ کیبنٹ کو ُاس دن تک ڈی نوٹیفائی نہیں کیا گیا تھا ،تاہم پنجاب اسمبلی ہنگامہ آرائی کیس میں سابق صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت اور سابق وزیر پروسکیوشن چوہدری ظہیرالدین کی عبوری ضمانت منظورکر لی، ایڈیشنل سیشن جج یاسین موہل نے 25 جون تک کی ضمانت قبل از گرفتاری منظور کرلی.

سابق صوبائی وزیر قانون پنجاب محمد بشارت راجہ نے کہا ہے کہ جعلی پنجاب حکومت ہمارے خلاف جعلی مقدمات بنا کر دباؤڈالنا چاہتی ہے لیکن ہم کل بھی اپنی جماعت کے ساتھ کھڑے تھے اور آج بھی کھڑے ہیں۔

پنجاب اسمبلی ہنگامہ آرائی کیس میں سابق صوبائی وزیر قانون پنجاب محمد بشارت راجہ نے سیشن کورٹ سے عبوری ضمانت حاصل کرلی۔ ایڈیشنل سیشن جج یاسین موہل نے 25 جون تک سابق صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت اور سابق وزیر پروسکیوشن چوہدری ظہیرالدین کی ضمانت قبل از گرفتاری منظور کرلی۔

اس موقع میڈیا نمائندگان سے بات چیت کرتے ہوئے سابق صوبائی وزیر قانون نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے حقیقی آزادی مارچ سے پنجاب حکومت بوکھلاہٹ کا شکار ہوگئی ہےاور پنجاب بھر میں پی ٹی آئی کے رہنماؤں پر جعلی مقدمات اور حراساں کرنے کا سلسلہ شروع ہوگیا ہے۔

محمد بشارت راجہ نے کہا کہ پنجاب حکومت کے اوچھے ہتھکنڈوں سے دباؤمیں آنے والے نہیں۔ ایسے اقدامات سے ہمارے حوصلے مزید بلند ہونگے اور اس جعلی حکومت سے جلد از جلد چھٹکارہ لے کر رہینگے۔ انہوں نے کہاکہ امپورٹڈ حکومت کےعوام دشمن بجٹ اور اٹھارہ اٹھارہ گھنٹے کی لوڈشیڈنگ نے عوام کا جینا محال کردیا اور غریب آدمی دو وقت کی روٹی کھانا مشکل ہوگیا ہے۔ آج پاکستان کا ہر شہری عمران خان کی حکومت کا یاد کررہا ہے