fbpx

پنجاب کے سیاحتی مقامات بند کرنے کا اعلان

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق پاکستان میں کرونا کی تیسری لہر جاری ہے،کرونا کے پھیلاو کو روکنے کے لئے ایس او پیز پر سختی سے عملدرآمد کا سلسلہ جاری ہے

پنجاب میں سیاحتی مقامات بند کرنے کا اعلان کر دیا گیا ہے،پنجاب میں سیاحتی مقامات 11 اپریل تک بند رہیں گے.چیف سیکرٹری پنجاب نے سیاحتی مقامات بند کرنے کے احکامات جاری کردئیے.شالامار باغ، مقبرہ جہانگیر، ہرن مینار کو فوری بند کردیا گیا . سیکرٹری سیاحت کا کہنا ہے کہ فیصلہ کورونا پھیلاو روکنے کے پیش نظر کیا گیا،اجتماعات کی حوصلہ شکنی کی جارہی ہے،ماسک پہنیں اور مناسب فاصلہ رکھیں،ان احتیاطی تدابیر کے ذریعے وائرس کے پھیلاو کو روکا جا سکتا ہے،

قبل ازیں حکومت کی جانب سے ایس او پیز جاری کی گئی ہیں جس کے مطابق ملک میں کورونا کی تیسری لہر کے پیشِ نظر حکومت کے وضع کردہ ایس او پیز پر سختی سے کاربند رہیں۔ ماسک کا استعمال کریں، بار بار ہاتھوں کو 20 سیکنڈ تک صابن سے دھوئیں۔ گھروں کو ہوادار بنائیں اور بلا ضرورت ہرگز گھر سے باہر نہ نکلیں۔ پُرہجوم جگہوں پر جانے سے گریز کریں۔

کرونا وائرس سے کس ملک کے فوج کے جنرل کی ہوئی موت؟

کرونا مریضوں کے علاج کیلئے یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز کو ملی بڑی کامیابی

کرونا کو ووہان وائرس کہنا درست،کرونا انسان کا بنایا ہوا، سابق ایم آئی 6 کے چیف کا دعویٰ

چین میں کرونا نے ایک بار پھر خطرے کی گھنٹی بجا دی

پنجاب میں ماسک پہننے کو لازمی قرار دِیا گیا ہے ، ماسک نہ پہننے والوں کے خلاف کارروائی عمل میں لائی جائے گی اور جرمانے کے علاوہ چھ ماہ قید بھی ہو سکتی ہے۔ وزیراعلیٰ پنجاب کی معاون خصوصی برائے اطلاعات ڈاکٹرفردوس عاشق اعوان کا کہن اتھا کہ پنجاب حکومت این سی او سی کی ہدایت پر مکمل عمل کر رہی ہے، صوبے میں کورونا وائرس کی صورتحال خطرناک ہو گئی ہے، گجرات اور گوجرانوالہ کے ہسپتالوں میں مریضوں کی تعداد سب سے زیادہ ہے۔ صوبے بھر میں ماسک پہننا لازمی قرار دیدیا گیا ہے اور خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف قانونی کارروائی ہو گی

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.