قبائلی اضلاع میں الیکشن ملتوی کرنے کا مطالبہ دھاندلی کی کوشش، امیدوار بول پڑے

قبائلی اضلاع کےامیدواروں نےالیکشن التوا کامطالبہ مسترد کردیا

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق امیدوار پی کے 113 جنوبی وزیرستان سمیع اللہ نے کہا کہ ہم نےقبائلی اضلاع میں انتخابی مہم شروع کی ہے،انتخابات ملتوی کرنےکی کسی کوشش کوقبول نہیں کرسکتے، جماعت اسلامی کے امیدوار اسداللہ نے کہا کہ کیا انتخابات میں 20دن تاخیرسےکیا قیام امن ممکن ہوجائےگا،پی ٹی آئی کوہارنظرآرہی ہےاس لیےتاخیری حربےاستعمال کیےجارہےہیں،امیدوار پی کے 111 نے کہا کہ آئین کےمطابق25جولائی تک ہرصورت انتخابات ہونےچاہییں،سیکیورٹی کابہانہ دھاندلی کی کوشش ہے،تاخیری حربے قبول نہیں.

واضح رہے کہ پشاور کی صوبائی حکومت نے سیکرٹری الیکشن کمیشن کوخط لکھا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ پڑوسی ملک افغانستان سےدہشتگردی کی کارروائیوں کاخطرہ ہے، نئےضم شدہ اضلاع میں انتخابات کوسبوتاژکرنےکےخطرات موجود ہیں،سیاسی قیادت کوبھی نشانہ بنانےکےحوالےسےخدشات موجود ہیں. خط کے ذریعے الیکشن کمیشن سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ شمالی وزیرستان میں حالیہ واقعات کےباعث بھی انتخابات ملتوی کیےجائیں ضم شدہ اضلاع میں انتخابات 20 دن کے لیے ملتوی کیےجائیں.

واضح رہے کہ الیکشن کمیشن کے شیڈول کے مطابق 2 جولائی کو ضم شدہ اضلاع میں انتخابات ہونے ہیں. شمالی وزیرستان میں پی ٹی ایم کے اراکین اسمبلی کی جانب سے پاک فوج کی چیک پوسٹ پر حملے کے بعد دہشت گردی کی کاروائیوں میں اضافہ دیکھنے میں آیا ہے،

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.