fbpx

قابض بھارتی فورسز کی مقبوضہ کشمیر میں بربریت جاری،مزید 2 کشمیری شہید

قابض بھارتی فورسز کی مقبوضہ کشمیر میں بربریت جاری ،فائرنگ کرکے مزید 2 کشمیری نوجوانوں کو شہید کر دیا-

باغی ٹی وی : کشمیرمیڈیاسروس( کے ایم ایس) کے مطابق ضلع پلوامہ میں قابض فورسزنے 2 کشمیری نوجوانوں کو شہیدکردیا،نوجوانوں کوراجپورہ گاؤں میں گھرگھرتلاشی کےدوران شہید کیا گیا-

بھارت سے یاسین ملک کی زندگی کی بھیک نہیں مانگیں گے اور نہ ہی ہتھیار ڈالیں گے،مشعال ملک

گزشتہ روز بھارتی فوج ، پولیس اور سینٹرل ریزروپولیس فورس کے اہلکاروں کی مشترکہ ٹیم نے ضلع کے علاقے اونتی پورہ میں تلاشی اور محاصرے کی کارروائی شروع کی تھی-

قبل ازیں موں وکشمیر نیشنل کانفرنس کے صدر فاروق عبداللہ نے بھارت کے غیر قانونی زیر قبضہ جموں وکشمیرمیں امن و امان کی بگڑتی ہوئی صورتحال پر مودی حکومت کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا ہے فاروق عبداللہ نے نئی دلی میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوجیوں کے ہاتھوں روزانہ کی بنیاد پر نہتے کشمیریوں کا قتل عام جاری ہے اورمقبوضہ علاقے کا بڑا حصہ بھارتی فوجی دستوں سے بھرا ہوا ہے۔

انہوں نے کہاکہ کشمیریوں کے دل جیتے بغیر مقبوضہ علاقے میں امن قائم نہیں ہو سکتا ۔ فاروق عبدعبداللہ نے کہاکہ لاکھوں کی تعداد میں قابض فوجیوں کی جموں وکشمیر کی موجودگی میں کبھی بھی کشمیری عوام کا دل نہیں جیتا جاسکتا ۔

بھارتی عدالت کا حریت رہنما محمد یاسین ملک کے خلاف معتصبا نہ فیصلہ،مجرم قرار دے دیا

قبل ازیں پاکستان نے اپنے بیان میں کہا تھا کہ حریت رہنما محمد یاسین ملک کو ایک متنازعہ اور یکطرفہ مقدمے میں سزا سنانے کے بعد بھارت کے غیر قانونی زیر قبضہ جموں و کشمیر میں بھارتی قابض افواج کے ہاتھوں نہتے کشمیریوں کے قتل عام کا سلسلہ تیز ہوگیا ہے۔

وزارت خارجہ کے ترجمان عاصم افتخار نے کہا تھا کہ پاکستان مقبوضہ کشمیر کے ضلع پلوامہ میں گزشتہ روز شروع کئے گئے فوجی آپریشن میں 2اور کشمیری نوجوانوں کے ماورائے عدالت قتل کی شدید مذمت کرتا ہے، گزشتہ چار دنوں میں ضلع اسلام آباد میں 2، ضلع بارہمولہ میں3 اور ضلع پلوامہ میں4 نوجوانوں سمیت 9 کشمیریوں کی شہادت انتہائی قابل مذمت اور کشمیریوں کے خلاف ظلم و جبر کی بھارت کی جاری مہم کا حصہ ہے۔

ترجمان نے کہا تھا کہ بھارتی قابض افواج نے 5 اگست 2019 کے بھارت کے غیر قانونی اور یکطرفہ اقدامات کے بعد اب تک 609سے زائد بے گناہ کشمیریوں کو شہید کیا ہے۔ بیان کے مطابق مقبوضہ کشمیر میں قتل و غارت کا سلسلہ بھارت کا کشمیریوں کے خلاف ریاستی دہشت گردی کو ایک ہتھیار کے طور پر استعمال کرنے کا واضح مظہر ہے۔

یاسین ملک کو مجرم قرار دینے کیخلاف مقبوضہ کشمیرمیں مکمل ہڑتال

بیان میں مزید کہا گیا تھا کہ محمد یاسین ملک کو ایک انتہائی مشکوک اور متنازعہ مقدمے میں سزا سنانے کے بعد بھارتی قابض افواج نے کشمیریوں کے ماورائے عدالت قتل کا سلسلہ تیز کردیا ہے۔ بھارتی قابض افواج پبلک سیفٹی ایکٹ، آرمڈ فورسز اسپیشل پاورز ایکٹ اور غیر قانونی سرگرمیوں کی روک تھام ایکٹ جیسے کالے قوانین کے تحت حاصل مکمل استثنیٰ کے ساتھ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین پامالیاں کررہی ہیں۔

ترجمان وزارت خارجہ نے عالمی برادری سے مطالبہ کیا تھا کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین اور منظم خلاف ورزیوں پر بھارت کو جوابدہ ٹھہرائے۔ بھارت کو اقوام متحدہ کے کمیشن آف انکوائری کو آزادانہ تحقیقات کی اجازت دینی چاہیے جو اقوام متحدہ کے ہائی کمشنر برائے انسانی حقوق نے اپنی 2018 اور 2019 کی کشمیر سے متعلق رپورٹوں میں تجویز کی تھی۔

پاکستان نے عالمی برادری پر زور دیا کہ وہ جنوبی ایشیا میں پائیدار امن اور استحکام کے لئے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی متعلقہ قراردادوں اور کشمیری عوام کی خواہشات کے مطابق جموں و کشمیر تنازعہ کے منصفانہ اور پرامن حل میں سہولت فراہم کرنے میں اپنا کردار ادا کرے۔

یاسین ملک پرجھوٹے الزامات کشمیریوں کی جدوجہد آزادی کو نہیں روک سکتے،شاہد آفریدی