fbpx

قبولِ اسلام کی عمر کی پابندی،ڈاکٹر محمدا شرف آصف جلالی کا بڑا اعلان

قبولِ اسلام کی عمر کی پابندی،ڈاکٹر محمدا شرف آصف جلالی کا بڑا اعلان

تحریک لبیک یارسول اللہ صلی اللہ علیک وسلم کے سربراہ اور تحریک صراط مستقیم کے بانی ڈاکٹر محمدا شرف آصف جلالی نے 18 سال سے کم عمر لڑکے یا لڑکی کے اسلام قبول کرنے پر پابندی کے بل کے بارے میں ردِّ عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ کوئی بھی غیر مسلم بچہ ہو یا بڑا اس کا عمر کے کسی حصے میں اسلام کو قبول کرنا اپنی فطرت کی طرف لوٹنا ہے۔

ڈاکٹر محمدا شرف آصف جلالی کا کہنا تھا کہ یہ ہر گز اقلیات کے حقوق پر کسی طرح کا کوئی تجاوز نہیں ہے۔ قبولِ اسلام کی عمر کی پابندی یا اسلام قبول کرنے کی تبلیغ پر پابندی کے خلاف بندہ ناچیز ہر فورم پر مناظرہ کرنے کے لیے تیار ہے۔ اسلام قبول کرنے کے لحاظ سے عمر کی پابندی قرآن و سنت کے سراسر منافی ہے ۔ یہ بل نظریہ پاکستان اور آئین پاکستان کی روح کے خلاف ہے۔ حدیث مصطفی ﷺ کے مطابق ہر بچہ اگرچہ وہ غیر مسلموں کے گھر میں پیدا ہو، فطرتِ اسلام پہ پیدا ہوتا ہے۔ پھر اس کے ہندو، سکھ، مجوسی، یہودی، نصرانی یا دیگر مذاہب کے والدین اس بچے کو فطرتِ اسلام سے تبدیل کرتے ہیں۔ چنانچہ اس بچے کا اسلام قبول کرنا فطرت کی طرف لوٹنا ہے۔

ماں بیٹی سے زیادتی کیس میں اہم پیشرفت سامنے آ گئی

لاہور میں رواں برس جنسی زیادتی کے 369 کیسز، کسی ایک ملزم کو بھی سزا نہ مل سکی

لاہور میں حوا کی دو اور بیٹیاں لٹ گئیں،اغوا کے بعد جنسی زیادتی

شوہر نے بھائی اور بھانجے کے ساتھ ملکر بیوی کے ساتھ ایسا کام کیا کہ سب گرفتار ہو گئے

لڑکیوں سے بڑھتے ہوئے زیادتی کے واقعات کی پنجاب اسمبلی میں بھی گونج

شادی کا جھانسہ ، ویڈیو بناکر زیادتی اور پھر بلیک میل کرنے والا ملزم گرفتار

ڈاکٹر محمد اشرف آصف جلالی کا کہنا تھا کہ ہماری شریعت کے مطابق اگر کوئی مسلمان مبلغ اس بچے کو اسلام کی طرف آنے کی تبلیغ کرتا ہے تو کوئی مذہب اس تبلیغ پر اعتراض نہیں کر سکتا۔ کیونکہ مسلم مبلغ اسے اصل فطرت کی طرف بلا رہا ہے جس پر اللہ نے اسے پیدا کیا تھا۔ اور اگر وہ بچہ عمر کے کسی حصے میں بھی واپس دین اسلام کی طرف پلٹتا ہے تو وہ اپنی اصل کی طرف پلٹ رہا ہے۔ اس پر کوئی اعتراض نہیں کیا جا سکتا۔ اقلیات کی خوشنودی کے لیے اللہ تعالیٰ اور رسول اللہ ﷺ کی ناراضگی مول لینا بہت بڑے خسارے کا سودا ہے۔ حکمران ایسی غلطیاں کر کے اپنے آپ کو خود ہی نفرت کا حوالہ بنا رہے ہیں۔ یہ بل اسلامی اقدار پر ایک بہت بڑا حملہ ہے۔ حکومت فوری طور پر یہ بل واپس کرے۔