قائمہ کمیٹی برائے دفاع میں کشمیریوں کے حق میں قرارداد منظور

سینیٹر رحمان ملک نے قائمہ کمیٹی دفاع میں کشمیرمیں بھارتی مظالم کیخلاف قرارداد پیش کردی

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق سینیٹررحمان ملک کی مذمتی قرارداد قائمہ کمیٹی دفاع نے متفقہ طور پر منظور کر لی ،قرارداد میں کہا گیا کہ قائمہ کمیٹی برائے دفاع کومقبوضہ کشمیرمیں بدترین انسانی حقوق کی پامالی پرتشویش ہے،بھارتی حکومت فوری طور پر مقبوضہ کشمیر سے کرفیو ہٹائے،

 

جنرل اسمبلی اجلاس میں جانے سے قبل وزیراعظم کس ملک جائیں گے؟ اہم خبر

یوم دفاع و شہدا پر بے مثال کوریج دینے پر میڈیا کا شکریہ، ترجمان پاک فوج

قرارداد میں کہا گیا مقبوضہ کشمیر میں بھارت کیطرف سےکرفیو کی وجہ سے بچے بیمارہورہے ہیں،مقبوضہ کشمیر میں کرفیو کی وجہ سے ادویات و اشیائے خور و نوش کی قلت ہے،

قائمہ کمیٹی برائے دفاع کا اجلاس، وزیر دفاع کی عدم شرکت،اراکین کمیٹی برہم

آئیں چلیں سب مظفرآباد،بن کر کشمیریوں کی آواز،فردوس عاشق اعوان

قبل ازیں سینیٹر ولید اقبال کی زیر صدارت سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے دفاع کا اجلاس ہوا .اجلاس میں بھارت کے آرٹیکل 370 ختم کرکے مقبوضہ کشمیر پر غیر آئینی اقدام پر بریفنگ دی گئی، اراکین کمیٹی نے وزیر دفاع پرویز خٹک کی عدم شرکت پر اظہار برہمی کیا، سینیٹررحمان ملک اور دیگر نے وزیردفاع کی شرکت یقینی بنانے کا مطالبہ کیا

اجلاس میں مسلم لیگ ن کے رہنما سینیٹر جاوید عباسی نے کہا کہ یہ بھی بتایا جائے کہ ہم کہاں کھڑے ہیں،ہماری تیاریاں کیا ہیں، جس پر ایڈیشنل سیکرٹری دفتر خارجہ نے کمیٹی کو بتایا کہ مقبوضہ کشمیرسےاچھی خبریں نہیں آرہیں،محرم میں مقبوضہ کشمیرمیں جلوس نہیں نکالنےدیا گیا ،مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر 50 ممالک نے مشترکہ اعلامیہ جاری کیا،

جنرل اسمبلی اجلاس، مودی کے بعد ہو گا پاکستانی وزیراعظم کا خطاب

سینیٹر رحمان ملک نے سوال کیا کہ کیا اعلامیے میں مقبوضہ کشمیر سے کرفیو اٹھانے کی بات ہوئی، ایڈیشنل سیکرٹری دفتر خارجہ نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ اعلامیے میں کرفیو اٹھانے کا کہا گیا ہے.

 

 

دفتر خارجہ آواز اٹھا رہا ہے، کشمیر جا کر لڑ نہیں سکتا، ایڈیشنل سیکرٹری خارجہ کی بریفنگ

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.