قرضوں کی تحقیقات، حسین اصغر کمیشن کے سربراہ مقرر

قرضوں کی تحقیقات کے لئے بنائے گئے تحقیقاتی کمیشن کا سربراہ ڈپٹی چیئرمین نیب حسین اصغر کو بنانے کی منظوری دے دی گئی ہے.
خواجہ آصف کیخلاف ثبوت کمیشن کو دوںگا، مریم کی بھی تحقیقات کریں گے. عثمان ڈار کا اعلان

حکومت کا وقت ختم، یہ اعلان کس نے کر دیا، اہم خبر آ گئی

 

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق وفاقی کابینہ کا اجلاس وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت ہوا، اجلاس میں وفاقی کابینہ نے حسین اصغر کو قرضوں کی تحقیقات کے لئے بنائے گئے کمیشن کا سربراہ بنا دیا ہے، حسین اصغر پولیس میں بھی رہ چکے ہیں، اور اس وقت نیب میں ڈپٹی چیئرمین کے عہدے پر کام کر رہے ہیں. حسین اصغر نے ایف آئی اے میں تعیناتی کے دنوں میں حج کرپشن کیس کی بھی انویسٹی گیشن کی تھی. وفاقی کابینہ کے اجلاس میں انکوائری کمیشن کی سربراہی کے لئے شعیب سڈل، حسین اصغو دیگر ناموں پر غور کیا گیا تاہم حسین اصغر کو کمیشن کا سربراہ بنا دیا گیا.

واضح رہے کہ وزیراعظم عمران خان نے کہا تھا کہ حکومت کی طرف سے جو تحقیقاتی کمیشن قائم کیا جارہا ہے یہ اقامہ رکھنے والوں کا حساب بھی کرے گا۔ تحقیقاتی کمیشن جلد قائم کیا جارہا ہے جس کا مقصد 24 ہزار ارب کے قرضوں کا حساب لینا ہے. مشکل فیصلے کر کے ملک کو دیوالیہ ہونے سے بچا لیا.

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.