قصور و گردو نواح میں ٹریفک پولیس اہلکاروں کو کیا ٹاسک مل گیا؟

قصور و گردو نواح میں ٹریفک پولیس اہلکاروں کو کیا ٹاسک مل گیا؟

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق وزیر ٹرانسپورٹ نے سیکرٹری ڈی آرٹی آے حافظ عثمان احمد اورٹریفک پولیس اہلکاروں کوضلعی حکومت کاخزانہ بھرنے کی ذمہ داری سونپ دی، قصور اور گردونواح میں سروس روڈ پرورکشاپ میں کھڑی گاڑیاں بندکردی،ٹریفک پولیس اہلکار ٹریفک کنٹرول کرنے کی بجائے اپناخزانہ بھرنے میں مصروف ہیں

سماجی حلقو ں کے نمائندوں نے بتایا کہ ڈی آر ٹی اے بمعہ عملہ آئے روز بے گناہ اورورکشاپ میں کھڑی گاڑیوں کوبندکرناشروع کردیا جب گاڑیوں کے مکمل کاغذات ہونے کابتایا جاتا ہے لیکن کاغذات مکمل ہونے کے باوجود گاڑیاں تین تین دن تک حوالات میں بند کردی جاتی ہیں جب گاڑیاں بندہوتی ہیں تو پھر پولیس تھانہ سٹاف اورسیکرٹری عملہ کی کی توعیدیں بن جاتی ہیں اگر مالکان گاڑی کے مکمل کاغذ لیکر آئے تو سارا سارا دن دفتر کے باہر کھڑا کرکے ذلیل ورسوا کیاجاتاہے اورشام کو بتایاجاتاہے اب صبح دفتر آئے اب دفتر ٹائم ختم ہوچکا ہے.

اب دوسرے دن پھر عملہ ہرگھنٹے بعد اپناجیب خرچ بڑھاچڑھاکر گاڑی جلد چھڑوانے کایقین دلاتا ہے اسی طرح کم از کم تین دن تک گاڑی حوالات میں بند ہونے کی وجہ سے گاڑی کاعملہ فاقوں پرمجبور ہوجاتاہے جس سے گاڑی عملہ تو خودکشی کرنے پر مجبور ہورہا ہے اسی طرح ٹریفک پولیس اہلکار جہاں ٹریفک جام ہوگی وہاں نظرنہیں آئیں گے اورجہاں بالکل رش نہ اورنہ ہی کوئی آمدورفت ہووہاں کھڑے ہوکر ٹریکٹر ٹرالی،ہیوی وہیکل گاڑیاں،کوسٹربس،ٹیوٹاہائی ایس،مزدا ٹرک اور رکشوں سمیت بے گناہ شہریوں کوتنگ کرنے میں مصروف ہیں سماجی حلقوں کے نمائندوں نے اعلیٰ افسران نے فوری نوٹس لینے کامطالبہ کیاہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.